Sunday , August 20 2017
Home / کھیل کی خبریں / ہند ۔پاک باہمی سیریز کیلئے اب بھی پر امید ہوں : شہریار

ہند ۔پاک باہمی سیریز کیلئے اب بھی پر امید ہوں : شہریار

ہندوستان ہمیں آئی سی سی میں تائید کا صلہ دے ۔ پاکستان بورڈ کے سربراہ کا بیان

کراچی 6 ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان کرکٹ بورڈ کے صدر نشین شہریار خان کا یہ احساس ہے کہ ہندوستان کو چاہئے کہ وہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل میں تین بڑوں کے طرز حکمرانی کو متعارف کروانے پر مدد کا پاکستان کو بدلہ دے ۔ شہریار خان نے یہاں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے آئی سی سی میں تین بڑوں کی حکمرانی کے نظام کی تائید کی تھی ۔ اس کی اپنی وجوہات بھی رہی ہیں لیکن ان میں سب سے اہم بات یہ تھی کہ ہم چاہتے تھے کہ اس کے نتیجہ میں ہندوستان کے ساتھ باہمی کرکٹ تعلقات بحال ہوجائیں۔ شہریار خان نے کہا کہ یہ حقیقت ہے کہ ہم تین بڑوں کے نظام کی تائید کرنے اسی وقت تیار ہوئے تھے جب ہندوستان نے ہمیں یہ تیقن دیا تھا کہ وہ پاکستان کے ساتھ کرکٹ تعلقات کو بحال کرلے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان بورڈ نے پاکستان کے ساتھ 2015 سے 2023 کے درمیان چھ سیریزوں میں مقابلہ کرنے کیلئے یادداشت مفاہمت پر دستخط بھی کرلئے تھے ۔ اس سوال پر کہ آیا یہ یادداشت مفاہمت آئی سی سی میں تین بڑوں کے نظام کی تائید کرنے کا صلہ تھا ‘ شہریار خان نے کہا کہ یہ بھی کہا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ بی سی سی آئی یادداشت مفاہمت میں کئے گئے وعدوں کا احترام کرے اور انہیں ابھی بھی امید ہے کہ بالآخر دونوں ملکوں کے مابین سیریز کھیلی جائیگی ۔ یادداشت مفاہمت کے بموجب دونوں ملکوں کے مابین پہلی سیریز جاریہ سال ڈسمبر میں ہونی ہے ۔

پاکستان میزبان رہے گا اور اس میں دو ٹسٹ ‘ پانچ ونڈے اور ایک ٹوئنٹی 20 میچ ہوگا ۔ یہ میچس متحدہ عرب امارات میں کھیلے جائیں گے ۔ کہا گیا ہے کہ ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ نے ابھی تک اس سیریز کی توثیق نہیں کی ہے اور اس کا کہنا ہے کہ اس کیلئے اسے حکومت ہند سے منظوری اور کلئیرنس حاصل کرنا ہے ۔ ایک اور سوال کے جواب میں شہریار خان نے کہا کہ اگر ہندوستانی کرکٹ بورڈ یادداشت مفاہمت کی تکمیل نہیں بھی کرتا ہے تو وہ اسے دھوکہ نہیں کہیں گے ۔ انہوں نے بتایا کہ تین بڑوں کی حکمرانی کے نظام کی تائید کرنے کا ایک اصل مقصد یہ تھا کہ ہندوستان کے ساتھ کرکٹ تعلقات بحال ہوں لیکن اس کی تائید کرنے میں ہماری اپنی بھی ترجیحات اور وجوہات رہی ہیں۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے بی سی سی آئی کو جاریہ ہفتے ہی ایک مکتوب روانہ کردیا گیا ہے جس میں ان سے کہا گیا ہے کہ وہ جتنا ممکن ہوسکے جلد اس سیریز کی توثیق کردیں کیونکہ میچس کی تیاری کیلئے وقت نکلا جا رہا ہے ۔ تین بڑوں کی حکمرانی کے نظام کے تحت عالمی کرکٹ کا ذمہ در اصل ہندوستان ‘ انگلینڈ اور آسٹریلیا کو سونپ دیا گیا ہے ۔ ہندوستان نے 2007 کے بعد سے پاکستان کے ساتھ مکمل باہمی سیریز کھیلنے گریز کیا ہوا ہے ۔ دونوں ملکوں کے مابین آخری ٹسٹ میچ 2007 ہی میں ہوا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT