Thursday , August 24 2017
Home / ہندوستان / ہند ۔ پاک بات چیت تیسرے ملک میںہوگی ؟ سی پی ایم لیڈر سیتارام یچوری کا ادعا ۔ پاکستان پالیسی پر تنقید

ہند ۔ پاک بات چیت تیسرے ملک میںہوگی ؟ سی پی ایم لیڈر سیتارام یچوری کا ادعا ۔ پاکستان پالیسی پر تنقید

بھوبنیشور، 15 جنوری ( سیاست ڈاٹ کام ) نریندر مودی حکومت کی پاکستان پالیسی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے سی پی ایم نے آج الزام عائد کیا کہ مرکزی حکومت اپنے پڑوسی ملک کے ساتھ کسی تیسرے ملک میں بات چیت کر رہی ہے ۔ یچوری نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان اور پاکستان کے مابین بات چیت کے مقام کو بیرونی ممالک کو منتقل کیا جا رہا ہے جبکہ یہ بات چیت دونوں ملکوں میں ہی کہیں ہونی چاہئے تھی ۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان ہمیشہ کہتا رہا ہے کہ دونوں ملکوں کے مابین مسائل کو باہمی طور پر حل کیا جانا چاہئے لیکن اب بات چیت کیلئے بیرونی سرزمین کا انتخاب کیا جا رہا ہے ۔ معتمدین خارجہ سطح کی بات چیت کو التوا کا شکار کئے جانے کے تعلق سے انہوں نے کہا کہ بات چیت کی بار بار تنسیخ یا التوا خطرناک رجحان ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ میں کسی تیسرے فریق کو رول ادا کرنے کا موقع نہیں دیا جانا چاہئے بلکہ اسے باہمی طور پر حل کرلینے کی ضرورت ہے ۔ دونوں ملکوں کے مشیران قومی سلامتی کی ملاقات ماہ ڈسمبر میں بنکاک میں ہوئی تھی ۔ وزیر اعظم مودی کی پالیسی کو وی آئی پی سفارتکاری قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کے عوام کو ملنے جلنے کا موقع دیا جانا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر دونوں ملکوں کے وزرائے اعظم ‘ وزرائے خارجہ اور معتمدین خارجہ ملاقات کرتے ہیں تو اس سے کوئی کامیابی نہیں ملتی ہے ۔ سرحد کے دونوں جانب کے عوام کو ملاقات کی اجازت دی جانی چاہئے ۔

TOPPOPULARRECENT