Thursday , August 24 2017
Home / Top Stories / ہند ۔ پاک معتمدین خارجہ بات چیت، پاکستان پر منحصر

ہند ۔ پاک معتمدین خارجہ بات چیت، پاکستان پر منحصر

جموں کشمیر میں جنگ بندی اور دہشت گرد سرگرمیوں کو ختم کرنا اولین شرط : وکاس سروپ
نئی دہلی ۔ 18 اگست (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان نے آج کہا کہ معتمدین خارجہ سطح کی بات چیت کے انعقاد کا فیصلہ کرنا پاکستان پر منحصر ہے۔ پاکستان کو یہ طئے کرنا ہے کہ آیا وہ بات چیت میں دلچسپی رکھتا ہے یا نہیں۔ اسے بات چیت سے پہلے سرحدپار دہشت گردی جموں کشمیر کے علاقوں پر غیرقانونی قبضوں کا تخلیہ اور دہشت گرد کیمپوں کو بند کرنے جیسے مسائل پر توجہ دینا ضروری ہے۔ پاکستان کے معتمد خارجہ عزیز احمد چودھری کی جانب سے کشمیر پر مذاکرات کیلئے کی گئی پیشکش کے جواب میں معتمدخارجہ ایس جئے شنکر نے کہا کہ ہند۔ پاک بات چیت میں اصل توجہ جموں کشمیر میں دہشت گرد سرگرمیوں کو کچلنا ہے اور وادی میں تشدد اور دہشت گردی کا خاتمہ کرنا ہے۔ اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے وزارت خارجہ کے ترجمان وکاس سروپ نے کہاکہ معتمدخارجہ جئے شنکر نے اپنے پاکستانی ہم منصب کی جانب سے دورہ اسلام آباد کی دعوت دیئے جانے کو قبول کرتے ہوئے بتایا کہ اس بات چیت میں سب سے پہلے جموں کشمیر کی صورتحال پر توجہ دی جائے گی اور وہ اس مسئلہ پر بھی زور دیں گے۔

16 اگست کو لکھے گئے مکتوب میں معتمدخارجہ نے سب سے پہلے پاکستان سے ازخود عائد کردہ الزامات کی جانب نشاندہی کی اور حکومت ہند کی جانب سے ان تمام الزامات کو مسترد کردیئے جانے کا بھی اظہار کیا۔ ان کا کہنا ہیکہ پاکستان کا موقف جموں کشمیر کے معاملہ میں غیرواضح ہے۔ جموں کشمیر ہندوستان کا اٹوٹ حصہ ہے۔ ہند۔ پاک معتمدین خارجہ کی بات چیت میں اسی موضوع کو اہمیت حاصل ہوگی۔ اس بات پر زور دیا جارہا ہیکہ پاکستان اپنی سرزمین کو دہشت گردوں کی پناہ گاہ نہ بنائے۔ ان کی سرپرستی نہ کرے اور نہ ہی وہ ہندوستانی قوانین سے راہ فرار اختیار کرسکتے ہیں۔ اب یہ فیصلہ کرنا پاکستان پر منحصر ہے کہ وہ بات چیت کیلئے تیار ہے تو اس بات چیت میں کشمیر مسئلہ پر توجہ دی جائے۔ بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ پاکستانی دہشت گروں کے خلاف کارروائی کرنا اور انہیں انصاف کے کٹہرے میں لانا پاکستان کی ذمہ داری ہے۔

 

کشمیر میں علحدگی پسندوں کا
احتجاج جاری رہے گا
سرینگر ۔ 18 اگست (سیاست ڈاٹ کام) جموں کشمیر کے علحدگی پسندوں نے آج اعلان کیا ہیکہ وہ وادی کشمیر میں اپنے احتجاج کو جاری رکھیں گے۔ آئندہ ایک ہفتہ کیلئے یہ احتجاج جاری رہے گا۔ اس احتجاج میں ضلع بڈگام میں اری پٹھن موضع تک مارچ نکالنا  بھی شامل ہے۔ جہاں پر سی آر پی ایف کی فائرنگ میں 4 کشمیری جوان ہلاک ہوئے ہیں۔

بہار میں موسلادھار بارش کے بعد سیلاب کا خطرہ
پٹنہ ۔ 18 اگست (سیاست ڈاٹ کام) شمالی بہار میں مسلسل موسلادھار بارش کے بعد دریائے گنگا کے سطح آب میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور اس کے تحت آنے والے بعض اضلاع میں سیلاب کا خطرہ بڑھ رہا ہے۔ عہدیداروں نے بتایا کہ ریاست کے دیگر حصوں میں بھی بارش سے تباہی آئی ہے اور ایک شخص ہلاک ہوا ہے۔

TOPPOPULARRECENT