Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / ہنر مندوں کو زمانے کی رفتار پیچھے نہیں کرسکتی ، فنی تعلیم میں مہارت پرزور

ہنر مندوں کو زمانے کی رفتار پیچھے نہیں کرسکتی ، فنی تعلیم میں مہارت پرزور

ملت کو روزگار سے جوڑنے کا مشن
ہنر مندوں کو زمانے کی رفتار پیچھے نہیں کرسکتی ، فنی تعلیم میں مہارت پرزور
سرکاری ملازمت میں لڑکیوں کیلئے بہترین مواقع ، اردو میڈیم اسکول نرمل میں طلباء و طالبات سے جناب عامر علی خاں کا خطاب

نرمل ۔ /6 مارچ (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) مسلم طلباء و طالبات جدید عصری تعلیم کے حصول کے ساتھ ساتھ پیشہ وارانہ تعلیم میں بھی مہارت اور عبور حاصل کریں ۔ میرا مقصد ملت کے نونہالوں کو حکومت کی جانب سے کئے گئے انتخابی وعدہ بالخصوص 12% تحفظات پر عمل آوری کے ساتھ ساتھ تعلیمی صلاحیت رکھنے والے طلباء و طالبات کو روزگار کی فراہمی اور ہنر مند افراد کو روزگار سے جوڑنا میرا مشن ہے ۔ 12% تحفظات کی جدوجہد کا تسلسل جاری ہے جبکہ تعلیم یافتہ باصلاحیت نوجوانوں کو تعاون کرتے ہوئے انہیں تعلیمی میدان میں آگے بڑھاتے ہوئے ان کی مدد اور ساتھ ہی ہنر مند طلباء و طالبات کے روزگار کو یقینی بنانے کے مقصد سے میں نے دو دن قبل ہی کرنول سے اپنے دورہ کا آغاز کیا ہوں ۔ ان خیالات کا اظہار مسٹر عامر علی خاں صاحب نیوز ایڈیٹر روزنامہ سیاست نے گلوبل ایجوکیشنل اینڈ ویلفیر سوسائیٹی نرمل کے زیراہتمام دکن ہائی اسکول اُردو میڈیم بدھوارپیٹ میں ٹیٹ کوچنگ سنٹر کے معائنہ کے دوران کیا ۔ انہوں نے اس موقع پر اپنا سلسلہ خطاب جاری رکھتے ہوئے کہا کہ طلبا و طالبات ہنر مندی میں کمال پیدا کرتے ہوئے مختلف روزگار کے وسائل سے وابستہ ہوسکتے ہیں اس لئے کہ موجودہ دور میں ہنرمند افراد کی مانگ اور اہمیت بہت زیادہ ہے ۔ جناب عامر علی خاں نے اس موقع پر یہ اعلان کیا کہ وہ بہت جلد شہر نرمل میں ایک کیرئیر اینڈ گائیڈنس سیمینار منعقد کریں گے جس میں حیدرآباد کے قابل و تجربہ کار اور ماہرین کی خدمات حاصل کی جائے گی ۔ انہوں نے طلباء کو مشورہ دیا کہ وہ روایتی تعلیمی کورس اور ملازمت کے علاوہ دیگر میدانوں جیسے گروپس کے امتحانات محکمہ پولیس کے امتحانات اور ریلویز کے امتحانات میں بھی تیاری کرتے ہوئے شرکت کریں ۔ اس لئے کہ زمانہ کی رفتار بدل چکی ہے اس لئے ضروری ہے کہ خود کو بدل دو قسمت خودبخود بدل جائے گی اس لئے کہ حوصلہ آگ کو گلزار بنادیتا ہے ۔ کبھی پہلی ناکامی پر مایوس نہیں ہونا چاہئیے ۔ جہد مسلسل کے ذریعہ کامیابی حاصل کرنے کے لئے آپ کو اکیلے ہی آگے بڑھنا پڑتا ہے ۔ لوگ آپ کے ساتھ تب آتے ہیں جب آپ کامیاب ہوجاتے ہیں ۔ عامر علی خاں نے واضح انداز میں کہا کہ ہم نے ملت کی فلاح و بہبود کے لئے تحفظات اور باصلاحیت نوجوان لڑکیوں اور لڑکوں کو آگے بڑھانے کے ارادہ سے یہ قدم اٹھایا ہے اس میں کوئی مقاصد نہیں اس قول کو ذہن میں رکھتے ہوئے آپ حضرات بھی آگے بڑھیں ۔ اگر تم ایک پنسل بن کر کسی کی خوشیاں نہیں لکھ سکتے تو کوشش کرکے ایک اچھا ربر بن جاؤ تاکہ کسی کا غم تو مٹاسکو ۔ آخر میں انہوں نے کہا کہ نرمل مستقر میں روزنامہ سیاست کی جانب سے لڑکیوں کو خودمکتفی بنانے کے لئے ٹیلرنگ سنٹر اب تیسرے بیاچ کو تیار کررہا ہے ۔ جبکہ میں نے ہمارے نمائندے جلیل ازہر کو اس بات کی ہدایت دی ہے کہ بیروزگار نوجوان جو فیس ادا نہیں کرسکتے ، ان کو موٹر ڈرائیونگ اسکول میں داخلہ دلواکر ڈرائیور کی ٹریننگ دی جائے گی جو روزگار سے جڑ جائے گا ۔ ٹریننگ کے اخراجات ہم برداشت کریں گے ۔ انہوں نے طالبات کی کثیر تعداد کو دیکھتے ہوئے نصیحت کی کہ وہ اپنے سونچنے کے انداز کی سمت کا رخ بدلیں ۔ اس لئے کہ ریاستی اور مرکزی حکومتوں کی جانب سے خواتین کو سرکاری تقررات میں 33% تحفظات دیئے جارہے ہیں ۔ لہذا مسلم لڑکیاں مختلف مسابقتی امتحانات میں شرکت کرتے ہوئے سرکاری ملازمت حاصل کرسکتے ہیں ۔ اس موقع پر انصار احمد ساحل صدر سوسائیٹی کی نمائندگی پر جناب عامر علی خاں نے گلوبل ٹیٹ کوچنگ سنٹر کے طلباء و طالبات کو ادارہ سیاست کی جانب سے TET کا مطالعاتی مواد مفت فراہم کرنے کا تیقن دیا ۔ اس موقع پر انصار احمد ساحل نے اپنی تقریر میں کہا کہ جناب عامر علی خاں ریاست تلنگانہ میں 12% مسلم تحفظات کی تحریک کے روح رواں ہیں جن کی حرکیاتی کوششوں کے نتیجہ میں یہ تحریک ساری ریاست میں عروج پر ہے ۔ جناب انصار احمد ساحلؔ نے جناب زاہد علی خاں مدیر اعلیٰ سیاست ، جناب عامر علی خاں نیوز ایڈیٹر سیاست کی زیرنگرانی مختلف سماجی ، تعلیمی ، دینی و ملی اور فلاحی خدمات اور کارناموں کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ بانی سیاست مرحوم جناب عابد علی خاں صاحب نے اخبار کے ساتھ ساتھ ملت کے بے سہارا لوگوں کی خدمات کا بیڑہ اٹھایا جبکہ جناب زاہد علی خاں صاحب نے اور بھی زیادہ وسعت دیتے ہوئے ملت کی تڑپ بالخصوص ملت کی بن بیاہی بیٹیوں کے رشتوں کے لئے جو منفرد اسکیم ’’دوبدو‘‘ شروع کی اس کی مثال کو ئی نہیں دے سکتا جبکہ نوجوان صحافی جناب عامر علی خاں نے اس تسلسل کو آگے بڑھاتے ہوئے مشن تحفظات اور باصلاحیت طلباء کی حوصلہ افزائی کے لئے بھرپور تعاون کرتے ہوئے ملت کے لئے اپنی دلی تڑپ کا ثبوت دیا ہے ۔ یقیناً منور رانا نے صبح کہا تھا کہ پھول پر باغ کی مٹی کا اثر آتا ہے جس کی جیتی جاگتی تصویر عامر علی خاں ہیں ۔ ان کی خدمات کھلی کتاب کی طرح ہیں ۔ قدرت نے جس خاندان کے قدموں میں شہرت کو سر رکھنے کا موقع دیا عظمت نے خاندان کے افراد کی پیشانی کو بوسہ دیئے اس کے باوجود اس خاندان کی ملی ، تعلیمی ، ملت سے تڑپ کو بھلایا نہیں جاسکتا ۔ اس موقع پر محمد قاسم کرسپانڈنٹ دکن ہائی اسکول ، سید جلیل ازہر اسٹاف رپورٹر روزنامہ سیاست ، مسٹر مظفر حسین ، قادر خان ، جناب مسعود علی اساتذہ کرام جناب معز الدین ، سید محمود تاج وغیرہ موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT