Wednesday , August 23 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ہنمکنڈہ میں 70 سالہ جشن یوم آزادی ، دو روزہ رنگا رنگ تقاریب

ہنمکنڈہ میں 70 سالہ جشن یوم آزادی ، دو روزہ رنگا رنگ تقاریب

ورنگل19 اگسٹ (سیاست ڈسڑکٹ نیوز) ایوان غزل صوبیداری ہنمکنڈہ میں ہر سال کی طرح اس سال بھی جشن یوم آزادی منایا گیا ۔امسال  70یوم آزادی کا جشن رنگارنگ انداز میں دو روزہ  منایا گیا۔ اس پروگرام کے کنوینر محمد مجاہد غفوری نے معززانے شہر کی بڑی تعدادکے ساتھ مہمانوں کا استقبال کیا۔ مشہور و معروف شاعر و ایڈوکیٹ اجمل محسن  کی صدارت میں ہونے والے اس پروگرام میں رکن اسمبلی حلقہ ورنگل مغرب داسیم ونئے بھاسکر اور  محمد شاہد مسعود  صاحب ایڈیشنل کمیشنر عظیم میونسپل کارپوریشن ورنگل نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔جناب بوڈا ڈناکارپوریٹر ورنگل میونسپل کارپوریشن اور جناب محمد سراج صاحب (ورلڈ پیش فیسٹول)  نے بطور مہمان اعزازی شرکت کی۔اس موقع  پر رکن اسمبلی داسیم ونئے بھاسکر نے اپنے خطاب میں کہا کہ اس ملک کی آزدی کی تحریک میں مسلمانوں  قربانیاں ناقابل فراموش ہے۔آزاد ہندوستان میں مسلمانوں کو مساوی حقوق سے کوئی محروم نہیں کرسکتا۔ انہوں نے نئی ریاست تلنگانہ کی تحریک میں مسلمانوںکے رول کی سراہانہ کی۔اس موقع پر انہوں نے کہا ایوان غزل کی جانب سے کئے جانے والی سماجی ، تہذیبی اور ادبی  خدمات  قابل  داد ہے۔ رکن اسمبلی داسیم  ونئے بھاسکر نے  جشن آزادی کے پروگرام کو سہ روزہ انعقاد رنے کے لئے ایوان غز ل کے ذمہ داران سے خواہش کی۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے محمد شاہد مسعود  صاحب ایڈیشنل کمیشنر عظیم میونسپل کارپوریشن ورنگل  نے کہاکہ ملک کی سالمیت گنگا جمنی تہذیب اور آپسی ورادریوں پر قائم ہے۔اس ملک کی ترقی میں عوامی سطح پر پر مثبت سونچ کا شعور بیدار کرنا لازمی ہے۔کسی بھی ملک کی ترقی حکومتوں سے زیادہ عوامی دلچسپی پر منحصر ہوتی ہے۔ اس موقع پر  انہوں نے تمام ملک کے شہریوں کو آزادی کی 70ویں سالگرہ کی مبارک باد پیش کی ۔محمد شاہد مسعود  صاحب ایڈیشنل کمیشنر عظیم میونسپل کارپوریشن ورنگل  نے سامعین کو اس وقت حیرت میں ڈال دیا جب انہوں نے ہندوستانی فلمی گانے کو اپنی سریلی آواز میں پیش کیا۔اس پروگرام کے صدر ایڈوکیٹ اجمل محسن نے اپنی صدارتی خطاب میں ملک کے حکمرانوں سے اپیل کی کہ اس ملک کی پہچان  تہذیب اور اقدار کا تحفظ کریں۔ انہوں نے بدل تے ماحول سے پر فکر کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مختلف ادیانوں کے مانے والوں کا ایک ساتھ گذر بسر ہونا ہی اس ملک کی شناخت ہے۔ ملک کی آزادی  کے شہدا کو خراج پیش کرنے کے بعد اس موقع پر  اکبر ضیا ء نے رکن اسمبلی داسیم ونئے بھاسکر  سے مخاطب ہوکر کہا کہ ول اردو کی ترقی اور حکومتی سطح پر اسکے رائج کرنے کے لئے ریاستی حکومت  سے نمائیندگی کریں۔پروگرام کنوینر محمد مجاہد غفوری نے مہانوں کی گلپوشی و شال پوشی کی تقریب عمل میں لائی۔بعد ازاںاس پروگرام میں قومی ترانہ کے بعد مختلف فنکاروں کی جانب سے حب الوطنی کے بے شمار نغمے پیش کا سلسلہ دیر رات تک چلتا رہا۔  ضلع کریم نگر سے تعلق رکھنے والے اور عالمی شناخت رکھنے والے محمد خواجہ مفطن الدین ، محمد عبدالعلیم جاوئد سینر صحافی ایس ایم سعید  اور محمد خواجہ مہیمین الدین نے فلمی اور غیر فلمی نغموں کو اپنی خوبصورت آواز میں پیش کیا۔ ان کے علاوہ  محمد حبب الدین موظف لیبر آفسر، ڈاکڑ مجاہد ابو طلحہ ، سید رفیع الدین، اختر حسین اختر اور اکبر ضیا نے حب الوطنی کے گیت پیش کئے۔گیتوں اور غزلوں کا پروگرام دیر رات تک ملسل جل تا رہا۔اسی طرح فنکاروں نے دوسرے دن بھی رات 9 بجے  پروگرام کا آغاز کیا ۔اس پروگرام میں بطور خاص شرکت کرنے والوں میں سید عارف (گرین باورجی)   افروز،  خواجہ شکیل احمد، علیم بھائی،   عبدالحفیظ قریشی سٹی واک ،  انجینر ماجد خان، محمد رحیم  ورلڈ ٹراویلز، خلیق الزماں، محمد موئید میڈیکل مینجر، کے علاوہ اردو  اساتذہ نے کافی  بڑی تعداد میں اس دو روزہ پروگرام میں شریک ہوکر  پروگرام کی مزید رونق میں اضافہ کیا۔ قومی ترانہ سارے جہاں سے اچھا ہندوستان ہمار ا کے بعدصحافی  محمد عبدالنعیم نے کلمہ تشکر پیش کیا اور اس دورزہ جشن یوم آزادی پروگرام کے اختتام کا اعلان کیا ۔

TOPPOPULARRECENT