Tuesday , October 17 2017
Home / شہر کی خبریں / ہوٹلوں کو صاف ستھرا اور آلودگی سے پاک رکھنے کی مہم

ہوٹلوں کو صاف ستھرا اور آلودگی سے پاک رکھنے کی مہم

ناقص انتظامات پر بھاری چالانات ، جی ایچ ایم سی کی از سر نو مہم
حیدرآباد۔21جولائی (سیاست نیوز) ہوٹلوں میں صفائی اور آلودگی سے پاک ماحول کی فراہمی کے لئے مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے بہت جلد از سر نو مہم کا آغاز کیا جائے گا اور جی ایچ ایم سی کی جانب سے کسی بھی ہوٹل میں عدم صفائی‘ بیت الخلاء کی عدم موجودگی یا گندی حالت میں رکھے جانے کی صورت میں انہیں چالانات کے علاوہ غیر معیاری اشیائے تغذیہ کی فراہمی اور بغیر فلٹر کیا ہوا پانی گاہکوں کو سربراہ کئے جانے پر بھی چالانات کئے جائیں گے۔ عہدیداروں نے بتایاکہ شہر میں ماہ رمضان المبارک سے قبل چلائی گئی مہم کے دوران اس کے مثبت اثرات برآمد ہوئے ہیں لیکن اب دوبارہ کئی مقامات سے شکایات موصول ہونے لگی ہیں جس کے سبب یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ اس مہم کو مسلسل جاری رکھا جائے گا ۔بتایاجاتا ہے کہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے کسی بھی ہوٹل یا ریستوراں میں غیر معیاری اشیاء کی فروخت اور گندگی کی شکایات آن لائن وصول کی جا رہی ہیں اور شہریوں کی جانب سے آن لائن شکایات روانہ کرنے کا رجحان بھی بڑھا ہے لیکن اس کے باوجود حالات میں تبدیلی نہ آنے کے سبب اس بات پر غور کیا جا رہا ہے کہ بلدی حدود میںریستوراں و ہوٹلوں میں عدم صفائی کے مسائل سے نمٹنے اور عام شہریوں کی شکایات موصول کرنے ٹول فری نمبر شروع کیا جائے گا ۔شہر میں موجود ریستوراں اور ہوٹلوں میں عدم صفائی کے علاوہ غیر معیاری اشیاء کی فروخت کے ساتھ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے مسالخ میں کئے گئے ذبیحہ کا ریکارڈ بھی جمع کیا جا رہا ہے اور اس بات کا جائزہ لیا جا رہا ہے کہ کس ریستوراں کو کس مسلخ سے کتنا گوشت فراہم کیا جا رہا ہے۔ تمام تفصیلات اکٹھا کرنے کے بعد جی ایچ ایم سی کی جانب سے ان ریستوراں و ہوٹلوں میں فروخت کا جائزہ لینے کا بھی منصوبہ ہے تاکہ اس حقیقت کا پتہ چلایا جاسکے کہ مسالخ کے علاوہ گوشت کتنا فروخت کیا جا رہا ہے ۔ جی ایچ ایم سی سے تعلق رکھنے والے ایک عہدیدار نے بتایا کہ شہر میں غیر قانونی ذبیحہ کو روکنے کیلئے کئے جانے والے اقدامات میں تیزی لانے کے لئے مکمل تفصیلات اکٹھا کی جا رہی ہیں کیونکہ اب تک جو اطلاعات موصول ہوئی ہیں ان کے مطابق شہر کی گنجان آبادی والے علاقو ںمیں اب بھی غیر قانونی ذبیحہ کا سلسلہ جاری ہے اور غیر قانونی مسالخ کے ذریعہ ہوٹلوں اور کیٹرنگ کمپنیوں کو گوشت فروخت کیا جا رہا ہے جس کی قیمت میں فی کیلو 20تا25روپئے کا فرق ہوتا ہے اسی لئے ریستوراں اور ہوٹل اسے ترجیح دیتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT