Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / ہوٹل انڈسٹری ، صنعت کار، اور سونے کے تاجرین بری طرح متاثر

ہوٹل انڈسٹری ، صنعت کار، اور سونے کے تاجرین بری طرح متاثر

نوٹوں کی تنسیخ سے ملک کے اکثریتی طبقہ کو دھکا، الحاج محمد سلیم رکن قانون ساز کونسل کا بیان
حیدرآباد۔25نومبر(سیاست نیوز) حکومت کے نوٹوں کی تنسیخ کے فیصلہ سے ملک کا ہر شہری متاثر ہوا ہے لیکن سب سے زیادہ متاثر ملک کا اکثریتی طبقہ ہوا ہے جبکہ اس فیصلہ سے مسلمانو ںکو ہونے والی مشکلات عارضی ہیں۔ ملک بھر میں موجود 20فیصد مسلم آبادی کا بہت چھوٹا حصہ ایسا ہے جو دولتمند ترین لوگوں میں شمار کیا جاتا ہے اور مسلمانوں میں بھی ان لوگوں کے لئے مشکلات ہیں جو سیاسی سرمایہ کاری اور غیر محسوب دولت اپنی منفعت کی خاطرجمع کئے ہوئے تھے۔جناب الحاج محمد سلیم رکن قانون ساز کونسل تلنگانہ راشٹر سمیتی نے آج یہ بات بتائی۔انہوں نے بتایا کہ ان حالات میں مسلمانوں بالخصوص چھوٹے تاجرین کو چاہئے کہ وہ اپنے تجارتی اصول مرتب کریں اور قوانین کے مطابق تجارت کے عمل کو یقینی بنائیں۔ ملک بھر میں جو لوگ نوٹوں کی تنسیخ کے عمل سے پریشان ہیں ان میں سب سے بڑی تعداد سونے کے تاجرین کی ہے جن میں مسلمانو ںکا ایک فیصد حصہ بھی نہیں ہے۔ اسی طرح سیاستداں ہیں جنہوں نے بے قاعدگیوں کے ذریعہ دولت حاصل کی ہے ان میں بھی مسلمانوں کا کوئی بڑا طبقہ شامل نہیں ہے۔بینک کاری نظام سے مسلمانوں کی عدم وابستگی اور سچر کمیٹی رپورٹ کا مطالعہ کیا جائے تو یہ بات واضح ہو جائے گی کہ ملک میں مسلمان کس حالت میں زندگی گذار رہے ہیں۔ صنعتکار مودی کے اس اقدام سے ناراض ہیں کیونکہ انہیں کروڑہا روپئے کا نقصان برداشت کرنا پڑ رہا ہے اور صنعتی شعبہ میں مسلمانوں کی تعداد نہیں کے برابر ہے۔

TOPPOPULARRECENT