Thursday , August 17 2017
Home / عرب دنیا / یمن میں امریکہ کی بمباری ، القاعدہ کے درجنوں جنگجوہلاک

یمن میں امریکہ کی بمباری ، القاعدہ کے درجنوں جنگجوہلاک

صنعاء ۔ 23 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کے محکمہ دفاع پینٹاگون کا کہنا ہے کہ یمن کے پہاڑی علاقوں میں امریکی جنگی طیارے کی بمباری سے شدت پسند تنظیم القاعدہ کے درجنوں شدت پسند ہلاک ہوئے ہیں۔ پینٹاگون کے ترجمان پیٹر کک نے بتایا کہ منگل کو ہوئی بمباری میں القاعدہ کے تربیتی مرکز کو نشانہ بنایا گیا جہاں 70 سے زیادہ جنگجو موجود تھے۔ اس سے پہلے گذشتہ سال امریکہ نے ڈرون حملوں کی مدد سے کئی شدت پسندو گروہوں کے رہنماؤں کو ہلاک کیا تھا۔ جنوری 2015 کے بعد سے جزیرہ نما عرب میں امریکی ڈرون طیاروں کے حملوں میں شدت پسند تنظیموں سے وابستہ اہم جنگجو ہلاک ہوئے ہیں۔ ان حملوں میں نصیر الوہیسی، ابراہیم آلروبیش سمیت چھوٹے درجوں کے کمانڈر بھی مارے گئے ہیں۔ پینٹاگون کے ترجمان نے کہا کہ یہ حملے ’القاعدہ کو شکست دینے اور اْن کے محفوظ ٹھکانوں‘ کے خاتمے کے امریکی فوج کے عزم کو ظاہر کرتے ہیں۔ البتہ یہ نہیں بتایا کہ القاعدہ کا تربیتی مرکز کس جگہ پر تھا۔ دوسری جانب یمن کے حکام نے اے پی کو بتایا کہ القاعدہ کے گڑھ میں ہونے والے فضائی حملے میں سابق فوجی اڈے کو نشانہ بنایا گیا جو اب القاعدہ کے قبضے میں تھا۔ یمن میں حوثی باغیوں کے خلاف سعودی عرب کی فضائی کارروائی سے شدت پسند تنظیم القاعدہ کے جنگجوں کے زیر قبضہ علاقوں اور تنصیبات میں اضافہ ہوا ہے۔ یمن میں حوثی باغیوں کو شکست دینے کے لیے مارچ 2015 سے سعودی عرب کی کمان میں جاری فضائی آپریشن اور سابق صدر کی حامی افواج کی لڑائی سے کم سے کم 6,000 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ اتحادی ممالک نے القاعدہ کو دہشت گرد تنظیم قرار دیا ہے کہ اور القاعدہ سے منسلک مقامی گروہ اتحادی افواج اور یمنی افواج پر حملے کرتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT