Tuesday , August 22 2017
Home / کھیل کی خبریں / یورو 2016ء میں مداحوں کا تشدد اور ہنگامہ آرائی

یورو 2016ء میں مداحوں کا تشدد اور ہنگامہ آرائی

کروشیاء، روس اور ترکی کے مداحوں پر تشدد میں ملوث ہونے کا الزام
سینٹ ٹین۔ 18 جون (سیاست ڈاٹ کام) کروشیائی فٹبال ٹیم کے مداحوں نے چک جمہوریہ کے خلاف اپنے ملک کے یورو 2016ء میچ کو روکنے کی کوشش کے طور پر فرانس کے سینٹ اسٹین اسٹیڈیم میں زبردست توڑ پھوڑ و ہنگامہ آرائی کی۔ ان اشرار کو ’’اسپورٹس کے دہشت گرد‘‘ قرار دیا گیا ہے اور اس واقعہ سے ٹورنمنٹ کیلئے نئے مسائل پیدا ہوگئے ہیں۔یو ایفا نے کہا ہے کہ ان واقعات کی تحقیقات کی جائیں گی۔ اس دوران کروشیا کے صدر کولنڈا گرابر کیٹارووچ نے پرتشدد مداحوں کو کروشیا کے دشمن قرار دیا ہے۔ روسی ٹیم کے مداحوں نے ایک ہفتہ قبل مارسیلی اسٹیڈیم میں اپنی حریف ٹیم انگلینڈ پر حملے کی کوشش کی تھی اور آج کے واقعہ کے بعد یوروپی چمپین شپ فائنلس کو دہرا دھمکہ لگا ہے۔ کروشیا۔ چک جمہوریہ مقابلہ کے دوران میدان پر ہنگامہ آرائی اور ٹیریس پر ہاتھاپائی کی تھی۔ نیس میں منعقدہ مقابلہ میں اسپین کے ہاتھوں ترکی کو شکست کے بعد شکست خوردہ ٹیم (ترکی)کے مداحوں نے جلتے ہوئے پٹاخوں کو میدان پر پھینک دیا تھا۔ اس دوران روسی حکومت نے فرانس میں اپنے مداحوں سے مبینہ نازیبا سلوک پر بدستور جارحانہ تیور برقرار رکھا ہے۔ روس کے صدر ولادیمیر پوٹن نے کہا ہے کہ ’’میں یہ سمجھ نہیں سکا ہوں کہ آیا کس طرح ہمارے 200 مداح، ہزاروں برطانوی مداحوں کو مارپیٹ کرسکتے ہیں‘‘۔ لیکن مارسیلی میں 20 روسیوں کو حراست میں رکھا گیا ہے جنہیں ہفتہ کو فرانس سے واپس بھیج دیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT