Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / یونائٹیڈ فورم میں جماعت اسلامی کی واپسی کے روشن امکانات

یونائٹیڈ فورم میں جماعت اسلامی کی واپسی کے روشن امکانات

ملت کے اتحاد کے لیے جماعت کا دیگر سیاسی جماعتوں کے ساتھ کام کرنے پر یقین، امیر جماعت اسلامی
حیدرآباد۔/11اگسٹ، ( سیاست نیوز) یونائٹیڈ مسلم فورم میں جماعت اسلامی کی واپسی کے امکانات روشن دکھائی دے رہے ہیں۔ امیر جماعت اسلامی تلنگانہ جناب حامد محمد خاں نے آج پریس کانفرنس کے دوران جماعت کی فورم میں واپسی کے امکانات کو کھلا رکھا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملت کے اتحاد کیلئے جماعت اسلامی دیگر جماعتوں کے ساتھ کام کرنے پر یقین رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ فی الوقت فورم میں جماعت کی واپسی کی اگرچہ کوئی تجویز نہیں ہے تاہم جو بھی فیصلہ ہوگا وہ جماعت کے ذمہ دار باہمی مشاورت کے ذریعہ کریں گے۔ یہ پوچھے جانے پر کہ آیا فورم میں شمولیت کیلئے دعوت وصول ہوئی ہے انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں راستہ کھلا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فورم سے علحدگی کا مقصد یہ نہیں کہ ہمیشہ کیلئے علحدگی ہوجائے ملت کے مفاد اور عظیم اتحاد کیلئے جماعت اسلامی ہمیشہ آگے رہی ہے۔ انہوں نے اس بات کا اشارہ دیا کہ جماعت اسلامی کی قومی امن و انسانیت مہم کے دوران حیدرآباد میں تمام جماعتوں کے اتحاد کا ایک اور مظاہرہ دیکھنے کو ملے گا۔ واضح رہے کہ حالیہ عرصہ میں جماعت اسلامی نے مقامی سیاسی جماعت سے قربت حاصل کرلی ہے اور یونائٹیڈ مسلم فورم میں شامل جماعتوں کے قائدین کے ساتھ جلسوں میں شرکت کی جارہی ہے۔ اس قربت سے قیاس آرائی کی جانے لگی کہ فورم میں جماعت اسلامی کو واپس لیا جائے گا۔ جماعت اسلامی نے جو فورم کے قیام میں اہم رول ادا کرچکی ہے بنیادی اصولوں سے انحراف کے بعد علحدگی اختیار کرلی تھی۔ جماعت نے فورم کے کسی قائد کے سرکاری عہدہ قبول کرنے کی مخالفت کی تھی۔ حالیہ عام انتخابات میں جماعت اسلامی کی زیر سرپرستی ویلفیر پارٹی آف انڈیا نے شہر اور اضلاع میں مقامی جماعت کے خلاف اپنے امیدوار میدان میں اُتارے تھے۔ فورم میں جماعت کی واپسی جماعت اسلامی سے زیادہ مقامی سیاسی جماعت کیلئے فائدہ مند ہوگی جو اپنے سیاسی حریفوں کی تعداد کم کرنے میں مصروف ہے۔ جماعت اسلامی کی یونائٹیڈ مسلم فورم میں واپسی کے مسئلہ پر جماعت کے حلقوں میں متضاد رائے دیکھی جارہی ہے۔ اس طرح کے کسی فیصلہ کی صورت میں تلنگانہ میں ویلفیر پارٹی آف انڈیا کی سیاسی سرگرمیوں کو بند کرنا پڑیگا۔

TOPPOPULARRECENT