Friday , September 22 2017
Home / ہندوستان / یونینیں 2 ؍ ستمبر کی ہڑتال کے موقف پر اٹل

یونینیں 2 ؍ ستمبر کی ہڑتال کے موقف پر اٹل

بھارتیہ مزدور سنگھ کی نظرثانی کیلئے اپیل، حکومت کو مہلت دینے کی خواہش
نئی دہلی۔ 28 اگست (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی ٹریڈ یونینس نے آج فیصلہ کیا کہ مجوزہ ملک گیر ہڑتال 2 ستمبر کو مزدور اصلاحات کے خلاف کی جائے گی جبکہ بی جے پی کی حمایت یافتہ تنظیم بی این ایس نے جو ایک وسیع ترین ٹریڈ یونین ہے، زور دیا ہیکہ ہڑتال کے فیصلہ پر نظرثانی کی جائے اور حکومت کو اس کے تیقنات کی تکمیل کیلئے 6 ماہ کی مہلت دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح 2 ستمبر سے ہڑتال کا اچانک فیصلہ کرنا درست نہیں ہے۔ انڈین نیشنل ٹریڈ یونین کانگریس ۔ (آئی این ٹی ای سی) کے صدر ڈی سنجیوا ریڈی نے 11 مرکزی ٹریڈ یونینس کے وفاق کی رابطہ کمیٹی کے اجلاس کے بعد ایک پریس کانفرنس میں اعلان کیا تھا کہ 2 ستمبر سے مرکزی حکومت کی لیبر اصلاحات کے خلاف ملک گیر ہڑتال کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ 31 اگست کو یونینیں دیگر تفصیلات کا اعلان کریں گی۔ بی ایم ایس نے تجویز پیش کی کہ یونینوں کو فی الحال ہڑتال پر نہیں لانا چاہئے اور حکومت کی جانب سے کل کئے جانے والے تیقنات کی روشنی میں اپنے فیصلہ پر نظرثانی کرنی چاہئے۔ سینئر وزراء کے ایک اعلیٰ سطحی گروپ نے یونین کے اعلیٰ قائدین سے چہارشنبہ اور جمعرات کو ملاقات کرکے ہڑتال کا اعلان واپس لینے کی ترغیب دینے کی کوشش کی تھی اور تیقن دیا تھا کہ ان کے مختلف مطالبات بشمول اقل ترین اجرتیں، کنٹراکٹ لیبر اور سماجی صیانت پر غور کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT