Tuesday , September 19 2017
Home / شہر کی خبریں / یونیورسٹیز میں زعفرانی طاقتوں کی مداخلت اور اجارہ داری کیخلاف بائیں بازو جماعتوں کا احتجاج

یونیورسٹیز میں زعفرانی طاقتوں کی مداخلت اور اجارہ داری کیخلاف بائیں بازو جماعتوں کا احتجاج

23 فروری کو چلو پارلیمنٹ پروگرام، قومی صدر اے آئی ایس ایف ولی اللہ قادری کا بیان
حیدرآباد 21 فروری (سیاست نیوز) ملک کی یونیورسٹیوں میں زعفرانی طاقتوں کی مداخلت اور اجارہ داری کے خلاف بائیں بازو نے اپنی تحریک میں شدت پیدا کردی ہے۔ بائیں بازو کی مضبوط طلبہ تنظیم اے آئی ایس ایف نے ملک کے حالات پر 23 فروری کو چلو پارلیمنٹ منعقد کرنے کا اعلان کیا۔ اس خصوص میں ا ے آئی ایس ایف کے قومی صدر مسٹر ولی اللہ قادری نے کہاکہ یہ ملک کی تاریخ کا سب سے بڑا مظاہرہ ہوگا۔ جس میں تمام بائیں بازو جماعتوں کے علاوہ کانگریس، عام آدمی پارٹی، بہوجن سماج پارٹی اور جنتا پریوار بھی شریک ہوں گے اور ملک کی 100 یونیورسٹیوں سے اسٹوڈنٹ یونین کے قائدین اس چلو پارلیمنٹ میں شرکت کررہے ہیں۔ مسٹر ولی اللہ قادری نے بائیں بازو جماعتوں پر آر ایس ایس، بی جے پی کی تنقید کو افسوسناک قرار دیا اور کہاکہ جن جماعتوں کے قائدین انگریزوں کے غلام رہے ان کے نظریات پر کام کرنے والوں کو یہ حق نہیں بنتا کہ وہ انگریزوں سے مقابلہ کرنے والوں پر تنقید کریں۔ انھوں نے کہاکہ بائیں بازو کمیونسٹ جماعتوں کی حب الوطنی پر کوئی شک نہیں کرسکتا۔ بائیں بازو پر تنقید کرنے والی آر ایس ایس اور بی جے پی کو چاہئے کہ وہ اپنے ماضی کی ایک بار جانچ کرلیں۔ مسٹر ولی اللہ قادری نے سخت برہمی کے عالم میں کہاکہ آر ایس ایس کے بانی اور اہم قائدین ساورکر گوویکر کے کردار کی تاریخ گواہ ہے کہ وہ انگریزوں کے غلام تھے اور کسی بھی محاذ میں جو انگریزوں کے خلاف تھا یہ قائدین کا نام و نشان نہیں ملتا جبکہ ملک کے لئے دی گئی قربانیوں سے بائیں بازو کی تاریخ بھری پڑی ہے۔ قومی صدر اے آئی ایس ایف نے کہاکہ ملک کی سالمیت اور حقوق کے لئے روہت نے جو آواز اُٹھائی تھی، اس آواز کو دبانے کے لئے آر ایس ایس کی کوششیں جاری ہیں۔ انھوں نے کہاکہ روہت نے حیدرآباد کی سنٹرل یونیورسٹی میں او بی سی مسلم اور دلتوں کے لئے آواز بلند کی تھی اور کنہیا نے اس آواز کو مضبوط کیا۔ انھوں نے کہاکہ کنہیا کی باعزت رہائی اور روہت ویمولہ کے ساتھ انصاف تک اے آئی ایس ایف کی جدوجہد جاری رہے گی۔ انھوں نے کہاکہ آر ایس ایس اپنے جال میں خود پھنس چکی ہے اور وہ حب الوطنی کے نعرے سے توجہ ہٹانے کی کوشش میں تھے لیکن خود ہی اپنے جال میں پھنس گئے۔ مسٹر ولی اللہ قادری نے کہاکہ آر ایس ایس اور بی جے پی کے لئے بائیں بازو سے مقابلہ مہنگا ثابت ہوگا۔ انھوں نے بتایا کہ 23 فروری کو امبیڈکر ہال سے پارلیمنٹ کا رُخ کیا جائے گا۔ اس چلو پارلیمنٹ میں کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی، دہلی کے چیف منسٹر اروند کجریوال، بائیں بازو قائدین یچوری، ڈی راجہ، پرکاش کرت، بہوجن سماج پارٹی کی صدر مایاوتی، کپل سبل، روہت ویمولہ کی والدہ اور دیگر شرکت کریں گے۔

TOPPOPULARRECENT