Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / یونیورسٹیز میں فرقہ پرست عناصر پر روک لگانے کا مطالبہ

یونیورسٹیز میں فرقہ پرست عناصر پر روک لگانے کا مطالبہ

حیدرآباد ۔ 17 ۔ نومبر : ( پریس نوٹ ) : موومنٹ فار ایجوکیشن اینڈ اکنامک تلنگانہ (میٹ ) نے ملک میں بڑھتی ہوئی فرقہ پرستی کو ایک بار پھر تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے تعلیمی اداروں بالخصوص یونیورسٹیز میں فرقہ پرست عناصر کی بڑھتی ہوئی سرگرمیوں پر روک لگانے کامطالبہ کیا ۔ میٹ کے عہدیداران سید علی الدین احمد اسد اور سید حمید الدین احمد محمود نے سیکولر حکمران میسور ٹیپو سلطان کے بعد سابقہ کیپٹن انڈین کرکٹ ٹیم محمد اظہر الدین پر بنائی جانے والی ہندی فلم پر روک لگانے کے مطالبہ کو شرپسندانہ اقدام قرار دیا اور کہا کہ تعلیمی اداروں میں سیاسی سرگرمیوں یا فرقہ پرستی پر مبنی پروگراموں پر فوری طور پر روک لگانے کی ضرورت ہے کیوں کہ اس سے نہ صرف طلباء وطالبات کے تعلیمی سرگرمیوں پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں بلکہ نصاب کی تکمیل مشکل ہوجاتی ہے ۔ اس سلسلہ میں ماہرین تعلیم کو بھی یونیورسٹیوں میں بڑھتی ہوئی ایسی منفی سرگرمیوں کی روک تھام کے لیے آگے آنے کی ضرورت ہے تاکہ نئی نسل کو ذہنی پراگندگی سے محفوظ رکھا جاسکے اور تعلیمی اداروں کا تقدس بھی بحال رہ سکے ۔ اس سلسلہ میں میٹ نے اقلیتی تعلیمی اداروں کے منتظمین سے خواہش کی کہ وہ اپنے طور پر اپنے ادارہ جات میں فرقہ وارانہ ہم آہنگی اور سیکولر اقدام کے تحفظ کے لیے بھی پروگرامس منعقد کریں ۔ میٹ نے امید ظاہر کی کہ تلنگانہ اور آندھرا پردیش میں اقلیتی تعلیمی اداروں کا موقف رکھنے والوں سے اس سلسلہ میں مثبت پہل کرتے ہوئے فرقہ پرستی کے بڑھتے رجحانات کے انسداد میں اہم رول ادا کریں گے ۔ اس سلسلہ میں میٹ ہر طرح کے اشتراک کے لیے آگے رہے گی ۔ سیل نمبر 8142908393 ۔ 9160774060 پر ربط قائم کیا جاسکتا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT