Saturday , July 22 2017
Home / ہندوستان / یوپی کے سرکاری اسکولوں میں ہفتہ کو پڑھائی نہیں محض کھیل کود

یوپی کے سرکاری اسکولوں میں ہفتہ کو پڑھائی نہیں محض کھیل کود

لکھنؤ13مئی (سیاست ڈاٹ کام ) اترپردیش حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ اسکولوں میں ہفتے کو پڑھائی نہیں کریں گے بلکہ موج مستی کریں گے ۔یوپی کے نائب وزیراعلیٰ دنیش شرما نے آج یہاں دعویٰ کیا کہ بچوں کے ٹیچر کے ساتھ تعلقات کو خوشگوار بنانے کے علاوہ ان کی شخصیت کے تمام پہلوؤں کو بہتر بنانے پر توجہ دی جائے گی۔ شرما نے جو سیکنڈری اور ہائیر ایجوکیشن کے وزیر بھی ہیں کل یہاں یوپی اور ہریانہ کے تعلیمی افسران کے ساتھ ایک میٹنگ میں اس تجویزپر غور کیا کہ ہفتے کے روز اسکول کے طلبا ء کتابوں کے بغیر اسکول آئیں۔ ایساکرنے سے ان بچوں کو بہت راحت محسوس ہوگی جو بھاری بھاری بیاگ لے کر اسکول آتے ہیں جس سے ان کے سر ،گردن،کمر اور پیروں میں درد ہوتا ہے ۔مختلف سروے میں پایا گیا ہے کہ بچے ایسے بیگ اٹھاکر اسکول آتے ہیں جو ان کے اپنے وزن کا 30 سے 40 فیصد ہوتا ہے جبکہ رہنما اصولوں کے مطابق بچہ کا بیاگ اس کے اپنے وزن کا محض 10 فیصد ہونا چاہئے ۔ وزن کی وجہ سے بچے ٹیڑھے ہوکر چلتے ہیں ۔ اس لئے کم از کم ایک دن انہیں بوجھ سے نجات دینے کے بارے میں سوچا گیا ہے ۔مگر ٹیچر تنظیموں کی اس تجویز پر رائے مختلف ہے ۔ یوپی مادھیامک شکشک سنگھ کے ریاستی سکریٹری آر پی مشرا نے کہا کہ ہفتے کے روز چونکہ پڑھائی نہیں ہوگی تو بہت سے والدین اپنے بچوں کو اسکول ہی نہیں بھیجیں گے ۔ ہمارا مقصد بچوں کو کھیل کود میں مصروف کرنا ہے مگر والدین انہیں گھر میں ہی رکھیں گے ۔ مشرا نے کہا کہ ہفتہ کو آدھے وقت پڑھائی اور آدھے وقت کھیل کود کے اچھے نتائج برآمد ہونگے اس سے دونوں مقصد حاصل ہوجائیں گے ۔ کچھ پڑھائی ہوگی ساتھ ہی بچے موج مستی بھی کریں گے ۔
مانسون 15مئی تک خلیج بنگال پہنچنے کا امکان
نئی دہلی13مئی (سیاست ڈاٹ کام ) جنوب مغربی مانسون اگلے دو دنوں یعنی 15مئی کو خلیج بنگال، جنوبی انڈمان اور نیکوبار جزائر میں پہنچنے کا اندازہ ہیں۔ہندوستانی محکمہ موسمیات کے ڈائریکٹر ڈاکٹر ایم مہاپاترا نے بتایا کہ پیر تک خلیج بنگال اور انڈمان اور نیکوبار جزائر میں مانسون کے پہنچنے کے لئے تمام حالات سازگار ہیں۔انہوں نے پیش قیاسی کی ہے کہ کیرالا میں جون کے پہلے ہفتے میں مانسون پہنچے گا۔ محکمہ موسمیات نے 18 اپریل کو مسلسل دوسرے سال عام مانسون کی پیش قیاسی کی تھی۔ ملک میں زراعت اور معیشت کے لئے یہ ایک اچھی خبر ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT