Wednesday , August 23 2017
Home / سیاسیات / یو پی انتخابات کیلئے عظیم اتحاد ممکن : اکھلیش یادو

یو پی انتخابات کیلئے عظیم اتحاد ممکن : اکھلیش یادو

اسمبلی انتخابات 2017 میں سیکولر سیاسی اتحاد ضروری ‘ بی جے پی کا مقابلہ کرنے چیف منسٹر یو پی کا اعلان
سنت کبیر نگر۔15نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) بہار میں بی جے پی کے خلاف عظیم اتحاد کی زبردست کامیابی سے حوصلہ پاکر چیف منسٹر اترپردیش اکھلیش یادو نے آج کہا کہ یو پی اسمبلی انتخابات 2017ء کے اوائل میں منعقد ہوں گے ۔ ریاست میں اس طرح کے عظیم اتحاد کے ساتھ انتخابی مقابلہ کیا جائے گا ۔ اکھلیش یادو سے جب اخباری نمائندوں نے سوال کیا کہ آیا 2017ء اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کا مقابلہ کرنے کیلئے یو پی میں بھی اس طرحکا سیاسی اتحاد کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ریاست میں ایک عظیم اتحاد ممکن ہے تاہم چیف منسٹر نے اس اتحاد میں کن کن پارٹیوں کو شامل کیا جائے گا اس کی وضاحت نہیں کی ۔ ان کا یہ ریمارک اترپردیش کے ایک وزیر کے اس بیان سے ایک دن بعد سامنے آیا جس میں انہوں نے حکمراں سماج وادی پارٹی اور مایاوتی زیر قیادت بی ایس پی کے ساتھ اتحاد بنانے کا اشارہ دیا گیا ۔

اب انتخابات بہار کی طرح ہوگا ۔ جہاں دو حریفوں آر جے ڈی صدر لالو پرساد یادو اور جنتا دل یو لیڈر نتیش کمار نے مل کر مقابلہ کیا اور بی جے پی کو 2014ء کے لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی نے زبردست کامیابی حاصل کی تھی ۔ پارٹی نے توقع ظاہر کی تھی کہ وہ تقریباً 15 سال بعد سیاسی طور پر اہمیت کی حامل ریاست اترپردیش میں دوبارہ اقتدار حاصل کرے گی ۔ چیف منسٹر اکھلیش یادو نے جو یہاں ایک خانگی دورہ پر ہپنچے تھے کہا کہ بہار کے عوام نے ترقی کے حق میں اپنا فیصلہ دیا ہے ۔ یو پی پنچایت انتخابات میں بھی عوام نے سماج وادی پارٹی کے ترقیاتی نعرہ کے حق میں ہی ووٹ دیا تھا ۔ ہم 2017ء کے اسمبلی انتخابات کا مقابلہ بھی ’’ترقی کے نعرہ ‘‘ پر ہی کریں گے ۔ بارہ بنکی میں یو پی کے وزیر فرید محفوظ نے کہا تھا کہ ان کی پارٹی سماج وادی اور بہوجن سماج پارٹی مل کر ایک عظیم اتحاد بنائیں گے اور 2017ء اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کو ناکام بنائیں گے ۔ اس وقت ایس پی اور بی ایس پی دو کٹر حریف پارٹیاں بہار کے خطوط پر یہ دونوں پارٹیاں اتحاد کریں گی ۔

TOPPOPULARRECENT