Sunday , May 28 2017
Home / سیاسیات / یو پی کے نو منتخبہ ارکان اسمبلی میں ہر 10 میں 8 کروڑ پتی

یو پی کے نو منتخبہ ارکان اسمبلی میں ہر 10 میں 8 کروڑ پتی

ہر 4 میں ایک رکن اسمبلی کو سنگین فوجداری مقدمات کا سامنا، 25 فیصد ارکان آٹھویں اور 12 ویں کامیاب

نئی دہلی ۔ /12 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) اترپردیش اسمبلی انتخابات میں نو منتخب ارکان میں اوسطاً ہر چار میں ایک سنگین فوجداری مقدمات جیسے قتل یا عصمت ریزی کا سامنا کررہے ہیں ۔ اسی طرح ہر 10 میں 8 ارکان اسمبلی کروڑ پتی ہیں ۔ یو پی الیکشن واچ اور اسوسی ایشن فار ڈیموکریٹک ریفارمس نے تازہ رپورٹ جاری کی جس کے مطابق 143 (36 فیصد) ارکان اسمبلی نے خود فوجداری مقدمات کا اعتراف کیا ہے ۔ 2012 ء اسمبلی انتخابات کے مقابلے یہ تعداد کم ہوئی ہے جبکہ اس وقت 189 ( 47 فیصد) ارکان اسمبلی فوجداری مقدمات کا سامنا کررہے تھے ۔ نو منتخبہ ارکان جو سنگین جرائم کے سلسلے میں مقدمات کا سامنا کررہے ہیں ان میں بی جے پی کے 83 ، ایس پی کے 11 ، ڈی ایس پی 4 اور کانگریس کا ایک رکن اسمبلی اور 3 آزاد ارکان اسمبلی شامل ہیں ۔ کامیاب امیدواروں کے مالی موقف کے بارے میں رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 322 (80 فیصد) ارکان اسمبلی کروڑ پتی ہیں ۔ 2012 ء اسمبلی انتخابات کے مقابلے ان کی تعداد میں اضافہ ہوا جبکہ اس وقت 271 (67 فیصد) ارکان کروڑ پتی تھے ۔ نو منتخب ارکان کے اوسطاً مالی اثاثہ جات 5.92 کروڑ کے ہیں ۔ 50 سے زائد ارکان اسمبلی نے ایک کروڑ سے زائد اثاثہ جات کا اعلان کیا اور صرف 4 ارکان اسمبلی نے PAN کی تفصیلات نہیں بتائی ۔ اسی طرح رپورٹ میں بتایا گیا کہ 101 (25 فیصد) ارکان اسمبلی کی تعلیمی قابلیت آٹھویں جماعت اور 12 ویںجماعت کامیاب ہے جبکہ 290 (72 فیصد) ارکان اسمبلی نے گریجویشن یا اس سے زائد تعلیم حاصل کرنے کا دعویٰ کیا ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT