Tuesday , July 25 2017
Home / شہر کی خبریں / یکم ؍ اپریل سے پرانے شہر میں ایرکنڈیشن آر ٹی سی بس خدمات

یکم ؍ اپریل سے پرانے شہر میں ایرکنڈیشن آر ٹی سی بس خدمات

کارپوریشن کیلئے 140 کروڑ کا بجٹ مختص، وزیر ٹرانسپورٹ مہیندر ریڈی کا بیانحیدرآباد ۔ 18 مارچ (سیاست نیوز) ریاستی وزیر ٹرانسپورٹ مہیندر ریڈی نے آر ٹی سی بسوں کے معاملے میں پرانے شہر سے مکمل انصاف کرنے اور بسوں کے نام اردو میں تحریر کرنے کا تیقن دیتے ہوئے کہا کہ پرانے شہر میں اپریل سے اے سی بسیں چلائی جائیں گی۔ فلک نما بس ڈپو کا آئندہ تین ماہ میں افتتاح کیا جائے گا۔ اسمبلی سیشن کے دوران ہی ارکان اسمبلی کا اجلاس طلب کرتے ہوئے تمام مسائل کو دور کرنے کا تیقن دیا۔ وقفہ سوالات کے دوران مجلس کے ارکان اسمبلی کی جانب سے پوچھے گئے سوالات کے جوابات دیتے ہوئے وزیر ٹرانسپورٹ مہیندر ریڈی نے کہا کہ آر ٹی سی کیلئے چیف منسٹر نے بجٹ میں 140 کروڑ روپئے مختص کئے ہیں۔ آر ٹی سی کو خسارے سے باہر نکالنے اور عوام کو تمام سہولتیں فراہم کرنے کی ہر ممکن کوشش کی جارہی ہے۔ گریٹر حیدرآباد کے حدود میں 3505 آر ٹی سی بسیں چلائی جارہی ہیں جن میں اے سی 160، میٹرو ڈیلکس 150، میٹرو ایکسپریس 882، منی بس 100 اور جنرل 2283 بسیں چلائی جارہی ہیں۔ 430 نئی بسیں خریدی گئی ہیں۔ 9 ہزار ڈرائیورس، 9 ہزار کنڈاکٹرس ہیں اور خاتون عملہ کی تعداد 1032 ہے۔ 300 مخلوعہ جائیدادیں ہیں۔ اس کے علاوہ 100 سی این جی بسیں بھی چلائی جارہی ہیں۔ بس شلٹرس کے قیام کی ذمہ داری جی ایچ ایم سی کی ہے۔ فلک نما ڈپو میں مزید کچھ کام باقی ہے۔ آئندہ تین ماہ میں اس کا افتتاح کردیا جائے گا۔ پرانے شہر میں اپریل سے اے سی بسیں بھی چلائی جائیں گی۔ مزید نئی بسیں خریدی جائیں گی جس میں منی بسیں بھی شامل رہیں گی۔ اس کے بعد پرانے شہر میں مزید بسیں چلائی جائیں گی۔ وزیر ٹرانسپورٹ نے بسوں کے سائن بورڈ اردو میں بھی تحریر کرنے کا تیقن دیا۔ مجلس کے رکن اسمبلی معظم خان نے فلک نما بس ڈپو اور مدھانی بس ڈپو کے افتتاح کے بارے میں وزیرٹرانسپورٹ سے سوال کیا سیٹ ون کے بسوں کو صرف نئے شہر تک محدود رکھنے کے بجائے پرانے شہر میں بھی چلانے کا مشورہ دیا۔ پرانے شہر میں ایک بھی اے سی بس نہیں چلانے کا الزام عائد کیا۔ اس کے علاوہ ہر معاملے میں پرانے شہر سے سوتیلا سلوک کرنے کا دعویٰ کیا۔ بس شیلٹرس کے قیام میں بھی پرانے شہر کو نظرانداز کردیا گیا۔ قائد مجلس اکبرالدین اویسی نے مختلف سوالات کرنے کے ساتھ ہائی ٹیک سٹی میں سوئپ کارڈ کے ذریعہ ٹکٹ کی اجرائی پر زور دیا۔ مجلس کے رکن اسمبلی جعفر حسین معراج نے سرکاری ہاسپٹلس سے آر ٹی سی بسوں کو جوڑنے اور اسکولس کے اوقات میں زیادہ بسیں چلانے کا مشورہ دیا۔ ریاستی وزیر ٹرانسپورٹ مہیندر ریڈی نے بجٹ سیشن کے دوران ہی آر ٹی سی کے عہدیداروں اور ارکان اسمبلی کا اجلاس طلب کرتے ہوئے تمام مسائل کو حل کرنے کا تیقن دیا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT