Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / یکم جولائی 2018 سے سرکاری ملازمین کو پی آر سی کا مطالبہ

یکم جولائی 2018 سے سرکاری ملازمین کو پی آر سی کا مطالبہ

پے ریویژن کمیشن کے تقرر پر زور ، تلنگانہ سرکاری ملازمین جے اے سی کا بیان
حیدرآباد ۔ 13 ۔ ستمبر : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ سرکاری ملازمین کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے یکم جولائی 2018 سے سرکاری ملازمین کے لیے پی آر سی ( پے ریویژن کمیشن ) کی عمل آوری کو یقینی بنانے کے لیے فی الفور نئے پے ریویژن کمیشن کا تقرر کرنے موثر اقدامات کا حکومت سے مطالبہ کیا اور کہا کہ متحدہ آندھرا پردیش حکومت میں تاخیر سے پے ریویژن کمیشنوں کے تقرر کی وجہ سے تین پی آر سیز سے سرکاری ملازمین محروم ہوگئے ۔ لہذا قبل از وقت ہی نئے پے ریویژن کمیشن کا تقرر عمل میں لایا جانا چاہئے ۔ صدر نشین ٹی جی اوز مسٹر سرینواس گوڑ ، ٹی جے اے سی صدر نشین کے رویندر ریڈی ، سکریٹری جنرل ٹی جے اے سی شریمتی ممتا کی زیر قیادت ایک وفد نے آج چیف سکریٹری حکومت تلنگانہ مسٹر ایس پی سنگھ سے ملاقات کر کے تلنگانہ سرکاری ملازمین کے دیرینہ حل طلب مسائل پر مبنی ایک تفصیلی یادداشت پیش کی جس پر چیف سکریٹری نے اپنے مثبت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے تبادلہ خیال کرنے کے بعد موثر و عاجلانہ اقدامات کرنے کا تیقن دیا ۔ وفد میں ٹی جے اے سی کے دیگر قائدین بھی شامل تھے ۔ بعد ازاں مسٹر سرینواس گوڑ نے بتایا کہ آندھرا علاقہ میں خدمات انجام دینے والے تلنگانہ سے تعلق رکھنے والے 800 ملازمین کو دوبارہ ریاست تلنگانہ کو واپس طلب کرلینے ، سرکاری ملازمین کے لیے فی الفور روبہ عمل لائی جانے والی سی پی ایس ( کانٹریبیوٹری پنشن اسکیم ) کو ختم کر کے فی الفور سابقہ میں روبہ عمل لائی گئی قدیم پنشن اسکیم کو روبہ عمل لانے دوبارہ احیاء عمل میں لانے کے لیے مثبت اقدامات کرنے و دیگر مطالبات پر چیف سکریٹری سے موثر نمائندگی کی گئی ۔ ٹی جے اے سی قائدین اس توقع کا اظہار کیا کہ حکومت چونکہ سرکاری ملازمین دوست ہے ۔ لہذا حکومت ان کی نمائندگی پر عاجلانہ اقدامات کرے گی ۔ ان قائدین نے سرکاری ملازمین کے لیے دسہرہ کے پیش نظر قبل از وقت 25 ستمبر کو تنخواہوں کی ادائیگی اور گرانی الاونس کی ادائیگی کے احکامات جاری کرنے پر حکومت سے اظہار تشکر کیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT