Thursday , August 24 2017
Home / شہر کی خبریں / ۔12 فیصد مسلم تحفظات پر زور ، پالیرو اسمبلی حلقہ کے رائے دہندوں کا مطالبہ

۔12 فیصد مسلم تحفظات پر زور ، پالیرو اسمبلی حلقہ کے رائے دہندوں کا مطالبہ

عوام میں مسلم مسائل پر شعور بیدار ، چیف منسٹر پر دباؤ ، محمد علی شبیر کی مہم میں عوام کا ردعمل
حیدرآباد۔/12مئی، ( سیاست نیوز) کھمم کے پالیرو اسمبلی حلقہ میں اقلیتی رائے دہندوں نے چیف منسٹرکی جانب سے 12فیصد تحفظات پر عمل آوری کا مطالبہ کیا ہے۔حلقہ کے ضمنی انتخاب کے سلسلہ میں گزشتہ دو دن سے کانگریس کی انتخابی مہم میں مصروف قائد اپوزیشن محمد علی شبیر نے بتایا کہ کھمم کے رائے دہندوں میں مسلم تحفظات اور دیگر مسلم مسائل کے سلسلہ میں کافی شعور پایا جاتا ہے۔ ٹی آر ایس کے قائدین جب انتخابی مہم کے سلسلہ میں مسلم آبادیوں میں پہنچے تو وہاں کے رائے دہندوں نے سب سے پہلے 12فیصد تحفظات پر عمل آوری کے بارے میں سوال کیا۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس کے قائدین اس بارے میں سوائے تیقن کے کچھ بھی کہنے سے قاصر ہیں۔ تحفظات کے مسئلہ پر عوام کے سوالات کا سامنا کرتے ہوئے ٹی آر ایس قائدین اور وزراء اُلجھن کا شکار ہیں اور وہ چیف منسٹر کے وعدہ کا اعادہ کرتے ہوئے ٹی آر ایس کو ووٹ دینے کی اپیل کررہے ہیں۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ کھمم کے مسلمان تعلیمی و معاشی ترقی کے بارے میں کافی باشعور ہیں اور انہوں نے وعدوں کے بجائے 4فیصد تحفظات پر عمل کرنے والی کانگریس پارٹی کو ووٹ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ محمد علی شبیر نے گذشتہ دو دن کے دوران کئی مواضعات میں پارٹی کی انتخابی مہم چلائی اور مقامی علماء کے ساتھ اجلاس منعقد کرتے ہوئے مسلم مسائل پر بات چیت کی۔ مقامی علماء نے ٹی آر ایس حکومت کی جانب سے اقلیتوں کے بارے میں کئے گئے وعدوں پر عمل آوری میں تاخیر پر افسوس کا اظہار کیا۔ محمد علی شبیر کے مطابق میلاکونڈہ پلی منڈل کے چیرو ماڈارم موضع کے مسلم نوجوانوں نے شکایت کی کہ اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے کے باوجود وہ ملازمتوں سے محروم ہیں۔ کے سی آر نے مسلمانوں کو ملازمتوں میں 12فیصد تحفظات کا وعدہ کیا تھا لیکن اسے فراموش کردیا گیا۔ انجینئرنگ کرنے والے طلباء بھی معمولی ملازمت کرنے پر مجبور ہیں۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ کھمم کے مسلمان مسلم تحفظات کی تحریک میں شدت پیدا کرنے کے خواہاں ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ پالیرو اسمبلی حلقہ کے 10مواضعات میں ٹی آر ایس کی جانب سے سرکاری مشنری کے بیجا استعمال کے باوجود عوام میں کانگریس کی امیدوار کے حق میں ہمدردی کی لہر ہے۔ آنجہانی رام ریڈی وینکٹ ریڈی کی بیوہ اس حلقہ سے کانگریس کے ٹکٹ پر مقابلہ کررہی ہیں۔ تلگودیشم اور وائی ایس آر کانگریس پارٹی نے کانگریس کی تائید کا اعلان کیا ہے۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ سرکاری مشنری کے استعمال کو روکنے کیلئے الیکشن کمشنر کے سخت گیر اقدامات قابل ستائش ہیں۔ انتخابی مہم کے دوران الیکشن کمشنر نے ٹی آر ایس کی کئی گاڑیوں کو نہ صرف ضبط کیا بلکہ انتخابی قواعد کی خلاف ورزی کے مقدمات درج کئے گئے۔

TOPPOPULARRECENT