Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / ۔1998 تا 2012 ڈی ایس سی کے امیدواروں کے ساتھ انصاف رسانی کا تیقن

۔1998 تا 2012 ڈی ایس سی کے امیدواروں کے ساتھ انصاف رسانی کا تیقن

جلد فیصلہ کے لیے چیف منسٹر تلنگانہ کا ہمدردانہ غور ، ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری کا بیان
حیدرآباد ۔ 18 ۔ جنوری (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر و وزیر تعلیم کڈیم سری ہری نے عوام کو تیقن دیا کہ حکومت 1998 ء تا 2012 ء مختلف ڈی ایس سی میں منتخب اساتذہ کے تقررات کے سلسلہ میں جلد کوئی فیصلہ کریںگے۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ کا چیف منسٹر ہمدردانہ طور پر جائزہ لے رہے ہیں اور بعض قانونی رکاوٹوں کے سبب تاخیر ہورہی ہے۔ تلنگانہ اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران اساتذہ کے تقررات کے مسئلہ پر ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ 1998 ء تا 2012 ء ڈی ایس سی کے ذریعہ منتخب اساتذہ کو انصاف دلانے کے لئے حکومت سنجیدہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ مختلف وجوہات کے سبب ان کے تقررات نہیں ہوپائے تھے لیکن تلنگانہ حکومت نے اس مسئلہ کا جائزہ لینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ متعلقہ فائل چیف منسٹر کے پاس ہے اور بعض قانونی ماہرین کی رائے حاصل کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جی اے ڈی کی جانب سے بعض اعتراضات کئے گئے جس کے باعث فیصلہ میں تاخیر ہوئی۔ انہوں نے واضح کیا کہ حکومت کو منتخب امیدواروں سے مکمل ہمدردی ہے اور وہ امید کرتے ہیں کہ چیف منسٹر انسانی ہمدردی کی بنیاد پر فیصلہ کریں گے۔ کڈیم سری ہری نے وضاحت کردی کہ اسکول اسسٹنٹ پوسٹ ضلع واری سطح کے ہیں اور انہیں زونل سطح کے عہدے تصور نہ کیا جائے۔ 1997 ء میں پبلک سرویس کمیشن کے ذریعہ 480 اسکول اسسٹنٹس کا تقرر کیا گیا تھا جن میں سے 222 تلنگانہ کو الاٹ کئے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ جی او 40 کے تحت 1992 ء سے اسکول اسسٹنٹ عہدہ کیلئے جو بھی تقررات کئے گئے ہیں، وہ ضلع کیڈر کے تحت آتے ہیں۔ انہوں نے اس سلسلہ میں پبلک سرویس کمیشن کی جانب سے جاری کردہ اعلامیہ کا حوالہ دیا۔ انہوں نے بتایا کہ اگر آر ٹی آئی کے تحت کسی نے ان عہدوں کو زونل کیڈر قرار دیا ہے تو یہ غلط ہے۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت ایڈیڈ اسکولوں اور کالجس کے اساتذہ کے مسائل کی یکسوئی کے اقدامات کرے گی ۔ سری ہری نے بتایا کہ اساتذہ کی مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات کے سلسلہ میں حکومت سنجیدہ ہے ۔ بی جے پی ارکان ڈاکٹر کے لکشمن اور کشن ریڈی نے اسکول اسسٹنٹس کے مسائل کی یکسوئی اور انہیں ضلع کیڈر کے بجائے زونل کیڈر کا درجہ دینے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے 1987 ء میں پبلک سرویس کمیشن کے جاری کردہ اعلامیہ کا حوالہ دیا ۔ ٹی آر ایس کے سرینواس گوڑ اور تلگو دیشم کے وینکٹ ویریا اور آر کرشنیا نے بھی اسکول اسسٹنٹ کے مسائل کی عاجلانہ یکسوئی کا مطالبہ کیا۔ کڈیم سری ہری نے بتایا کہ حکومت نے جی او ایم ایس 19 مورخہ 18 مئی 2016 ء کے ذریعہ اساتذہ کے تقررات کی ذمہ داری تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن کے سپرد کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یونیفائیڈ سرویس رولز سے متعلق سپریم کورٹ کے فیصلے کے سلسلہ میں حکومت ہند کو بعض تجاویز پیش کی گئیں تاکہ صدارتی حکمنامہ میں ترمیمات کی جائیں۔

TOPPOPULARRECENT