Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / ۔200 روپیوں کے نوٹوں کی اشاعت میں تیزی ، 2000 کے نوٹ کی چھپائی بند

۔200 روپیوں کے نوٹوں کی اشاعت میں تیزی ، 2000 کے نوٹ کی چھپائی بند

کرنسی تنسیخ کے بعد حکومت کی حکمت عملی پر عمل ، تبدیلی نوٹ پر حکومت کا کسی بھی وقت فیصلہ ممکن
حیدرآباد۔26جولائی (سیاست نیوز) ریزرو بینک آف انڈیا نے 2000کے کرنسی نوٹوں کی اشاعت مکمل بند کردی ہے اور 200 روپئے کے کرنسی نوٹوں کی اشاعت میں تیزی لانے کے اقدامات کئے جانے لگے ہے ۔ جون سے جاری 200 کے کرنسی نوٹوں کی اشاعت میں تیزی پیدا کردی گئی ہے اور توقع ہے کہ آئندہ ماہ کے اواخر میں 200کے نئے کرنسی نوٹ بازار میں جاری کردیئے جائیں گے۔ باوثوق ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے مطابق مرکزی حکومت کرنسی تنسیخ کے بعد کی جو حکمت عملی اختیار کی ہوئی تھی اسی کے عین مطابق اقدامات کئے جارہے ہیں اور بازار میں 2000کی کرنسی نوٹ کی قلت کے بعد عوام کو اس بات کا احساس ہونے لگا تھا کہ 2000کے کرنسی نوٹ بھی منسوخ کردیئے جائیں گے لیکن اب تک اس بات کی توثیق نہیں کی جا رہی ہے کہ 2000کے کرنسی نوٹوں کو بھی منسوخ کردیا جائے گا مگر ان کی اشاعت کو بند کردیئے جانے کے بعد عوام میں شبہات پیدا ہونے لگیں گے۔ تفصیلات کے مطابق 8نومبر 2016کو حکومت ہند کے کرنسی تنسیخ کے فیصلہ کے فوری بعد حکومت نے 2000اور 500 کے نئے نوٹ جاری کی تھیں۔ ریزرو بینک آف انڈیا کے مطابق نومبر 2016 سے اب تک بازار میں 3.7بلین 2000کے کرنسی نوٹ جاری کئے جا چکے ہیں اور ان کرنسی نوٹوں کی جملہ مالیت 7لاکھ 40ہزار کروڑ ہے جبکہ کرنسی تنسیخ کے فیصلہ کے بعد 6.3بلین 1000کے منسوخ کرنسی نوٹوں سے دستبرداری اختیار کی گئی تھی۔ بتایاجاتا ہے کہ 200کے کرنسی نوٹ کی اجرائی کے بعد ملک میں کرنسی کی قلت اور غیر محسوب دولت جمع کرنے کے رجحان میں کمی واقع ہوگی اور عوام کو بہ آسانی کرنسی نوٹ دستیاب رہیں گے۔ اسی طرح حکومت ہند اور آر بی آئی کی جانب سے تیار کردہ منصوبہ کے مطابق نقد لین دین کے رجحان کو کم کرنے کیلئے اقدامات میں بھی یہ عمل معاون ثابت ہوگا اور 200کے کرنسی نوٹ اے ٹی ایم کے ذریعہ بھی فوری جاری کرنے کے اقدامات کو ممکن بنایا جارہاہے لیکن کہا جا رہا ہے کہ اے ٹی ایم کے ذریعہ رقومات کی منہائی کی حد مقرر کی جائے گی اور اس پر سختی سے عمل کیا جائے گا۔ ریزرو بینک آف انڈیا کے ذرائع کے مطابق 200 کے کرنسی نوٹ کی اجرائی اور 2000کے کرنسی نوٹوں کی اشاعت بند کردیئے جانے کے بعد یہ بات واضح ہوتی جا رہی ہے کہ حکومت 2000 کے نوٹوں کے متعلق بھی سخت فیصلہ کرسکتی ہے لیکن 8نومبر کی طرح اچانک فیصلہ کے امکانات کم ہیں۔

TOPPOPULARRECENT