Wednesday , September 20 2017
Home / ہندوستان / ۔21 جون کو یوگا ڈے کا ’’اوم‘‘ اور سنسکرت اشلوک سے آغاز ہوگا

۔21 جون کو یوگا ڈے کا ’’اوم‘‘ اور سنسکرت اشلوک سے آغاز ہوگا

یو جی سی کی یونیورسٹیز کو ہدایات ، مرکزی حکومت بے حس ، فرقہ پرست ایجنڈہ مسلط کرنے اپوزیشن کا الزام

نئی دہلی۔ 17 مئی (سیاست ڈاٹ کام) یونیورسٹی گرانٹس کمیشن (یو جی سی) کی جاری کردہ ہدایات پر ایک نیا تنازعہ کھڑا ہوگیا جس میں تمام یونیورسٹیز اور کالجس سے کہا گیا ہے کہ وہ 21 جون کو ’’یوگا ڈے‘‘ تقاریب کے دوران وزارت آیوش کے ’’یوگا پروٹوکول‘‘ پر عمل کرے جس کا آغاز ’’اوم‘‘ اور چند سنسکرت شلوکوں سے ہوتا ہے۔ کانگریس نے بی جے پی زیرقیادت حکومت کو ’’بے حس‘‘ قرار دیتے ہوئے شدید تنقید کی اور کہا کہ یوگا ہندوستان کی قدیم تہذیب کا ایک اہم جز ہے۔ اس کا تعلق زعفرانی جماعت سے نہیں۔ جنتا دل (یو) نے اسے ہندوستانی عوام پر فرقہ پرستانہ ایجنڈہ تھوپنے کی ایک اور کوشش قرار دیا۔ کانگریس ترجمان پی سی چاکو نے کہا کہ یوگا ہندوستان قدیم تہذیب کا ایک اہم حصہ اور ایک بے حد مفید علم ہے۔ یہ کوئی ایسی چیز نہیں جس کا تعلق بی جے پی سے ہو۔ اسے زیادہ سے زیادہ قابل قبول بنانا چاہئے تاکہ لوگ اس پر عمل کرسکیں، لیکن ایسا لگتا ہے کہ حکومت کو ان حساس پہلوؤں کی کوئی پرواہ نہیں ہے۔ سینئر جنتا دل (یو) لیڈر کے سی تیاگی نے حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ ہندوستانی عوام پر فرقہ پرستانہ ایجنڈہ مسلط کرنے کی ایک اور کوشش ہے ، ہم اس کے مخالف ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آپ مسلمان، سکھ ، عیسائی سے ’’اوم ‘‘کہنے کیلئے کس طرح اصرار کرسکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وہ ایک ہندو ہیں اور انہیں کوئی مسئلہ نہیں لیکن دیگر مذاہب کے ماننے والوں کو کس طرح زبردستی کی جاسکتی ہے۔ یہ فرقہ پرستی کا مظہر اور آر ایس ایس کا تخریبی ایجنڈہ ہے جس کی ہم مذمت کرتے ہیں۔ یو جی سی سیکریٹری جسپال ایس سندھو نے گزشتہ ہفتہ یونیورسٹیز کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے نہ صرف یونیورسٹیز بلکہ تمام ملحقہ اداروں میں یوگا ڈے تقاریب میں وائس چانسلرس سے شخصی طور پر دلچسپی لینے کی خواہش کی گئی۔انہوں نے کہا کہ اس موقع کیلئے خصوصی ایکشن پلان تیار کریں اور اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ طلبہ و اساتذہ کی زیادہ سے زیادہ تعداد اس میں حصہ لے۔ مکتوب کے ساتھ وزارت ِ آیوش کا یوگا کی مشق کیلئے 45 منٹ پر مبنی پروٹوکول بھی روانہ کیا گیا ہے۔ یہ پروٹوکول 2 منٹ کی پوجا اور ’’اوم‘‘ کے نعروں کے ساتھ ساتھ سنسکرت کے چند اشلوکوں سے شروع ہوتا ہے۔ اس کے بعد 18 منٹ کیلئے مختلف یوگا آسن اور پرانایم (ہاتھ جوڑ کر نمسکار) دیئے گئے ہیں۔ پروٹوکول کے مطابق شرکاء 9 منٹ کیلئے گیان دھیان میں بیٹھے رہیں گے اور آخر میں شانتی پاتھ (امن کی راہ) ہوگا۔ حکومت اور بی جے پی کا یہ موقف ہے کہ گزشتہ سال کے پروٹوکول کو برقرار رکھا گیا ہے اور اس میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی۔ بی جے پی قومی سیکریٹری سریکانت شرما نے کہا کہ بعض لوگ یوگا کو مذہب سے مربوط کررہے ہیں جبکہ یہ بہتر صحت کیلئے ناگزیر ہے۔

TOPPOPULARRECENT