Sunday , September 24 2017
Home / شہر کی خبریں / ۔30 جون کو جامعہ عثمانیہ میں بیف فیسٹیول

۔30 جون کو جامعہ عثمانیہ میں بیف فیسٹیول

بائیں بازو طلبہ تنظیموں کی تیاریاں ، زعفرانی تنظیمیں مخالفت کے لیے مصروف
حیدرآباد۔21جون(سیاست نیوز) جامعہ عثمانیہ میں بائیں بازو طلبہ تنظیموں کی جانب سے 30جون کو بیف فیسٹیول کے انعقاد کی تیاریاں زور و شور سے جاری ہیں اور طلبہ تنظیموں کے ذمہ داروں نے اس بات کا قطعی فیصلہ کرلیا ہے کہ 30جون کو بیف فیسٹیول کا انعقاد عمل میں لایا جائے۔زعفرانی تنظیموں کے ذمہ دار وں کی جانب سے بیف فیسٹیول کے خلاف فیسٹیول کے انعقاد کی تیاریاں بھی کی جا رہی ہیں۔مرکزی حکومت کی جانب سے بڑے جانور کی ذبیحہ کے لئے فروخت پر روک لگائے جانے کے اعلامیہ کے بعد ہی مختلف یونیورسٹیز میں طلبہ نے احتجاج کرتے ہوئے اس بات کا اعلان کیا تھا کہ حکومت کی جانب سے غذائی آزادی پر پابندی عائد کرنے کی کوشش کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔جامعہ عثمانیہ طلبہ تنظیموں کی جانب سے منعقد کئے جانے والے بیف فیسٹیول کو بائیں بازو جماعتوں کے علاوہ مختلف تنظیموں کی تائید حاصل ہے اور طلبہ تنظیموں کے ذمہ داروں کا کہنا ہے کہ 30جون سے قبل وہ دیگر سیاسی جماعتوں کے ذمہ دار قائدین سے ملاقات کرتے ہوئے انہیں اس فیسٹیول میں شرکت کیلئے مدعو کریں گے اور اس بات کی بھی کوشش کی جائے گی کہ ریاستی حکومت مرکز کے اس اعلامیہ کے متعلق اپنا موقف واضح کرے۔طلبہ تنظیموں کے ذمہ داروں کا کہنا ہے کہ انہیں دعوت رکھنے کیلئے کسی انتظامیہ کی اجازت حاصل کرنے کی ضرورت نہیں ہے لیکن نظم و ضبط کی برقراری کیلئے متعلقہ عہدیداروں کو واقف کرواتے ہوئے انہیں مقام اور وقت کے متعلق بتا دیا جائے گا تاکہ وہ اپنے انتظامات کرسکیں۔زعفرانی تنظیموں کے طلبہ تنظیموں کی جانب سے بیف فیسٹیول کے خلاف ’پورک‘ فیسٹیول کے انعقاد کے متعلق بائیں بازو تنظیموں کے ذمہ داروں کا کہنا ہے کہ ان کے اس اقدام پر انہیں کوئی اعتراض نہیں ہے ہم تو غذائی آزادی کی حمایت کر رہے ہیں ۔بائیں بازو طلبہ تنظیمو ںکے ذمہ داروں نے بتایا کہ جو بیف کھاتے ہیں وہ ان کی پسند سے کھاتے ہیں اور انہیں روکا نہیں جانا چاہئے ۔ِ اسی طرح اگر کسی کو ’پورک ‘ پسند ہے وہ کھا رہا ہے تو ہم کیا کرسکتے ہیں وہ کھائے دوسروں کو بیف سے روکنے کی کوشش کیوں کر رہے ہیں؟

Top Stories

TOPPOPULARRECENT