Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / ۔31 جولائی سے فوڈ سیکوریٹی کارڈس کی تقسیم

۔31 جولائی سے فوڈ سیکوریٹی کارڈس کی تقسیم

2 کروڑ 80 لاکھ افراد کو فائدہ متوقع ، دھاندلیوں کو روکنے حکومت تلنگانہ کا اقدام
حیدرآباد۔13 جولائی (سیاست نیوز ) حکومت تلنگانہ کی جانب سے ریاست میں 31جولائی سے فوڈ سکیوریٹی کارڈ کی تقسیم عمل میں لائی جائے گی۔ حکومت تلنگانہ کی جانب سے ریاست میں سطح غربت سے نیچے زندگی گذارنے والے خاندانوں کو ارزاں فروشی کی دکانوں سے راشن کی تقسیم کے عمل کو بہتر بنانے کیلئے کئے گئے اقدامات سے ریاست میں 2کروڑ 80لاکھ افراد کو فائدہ حاصل ہوگا۔ ریاست آندھرا پردیش کی تقسیم کے بعد حکومت تلنگانہ نے راشن کارڈ کی تنسیخ اور فوڈ سکیوریٹی کارڈ کی اجرائی کا اعلان کیا تھا اور گذشتہ 20ماہ سے قدیم راشن کارڈس کی بنیاد پر ہی راشن کی فروخت عمل میں لائی جارہی تھی اور اب تک فوڈ سکیوریٹی کارڈ جاری نہیں کئے گئے تھے لیکن اب فوڈ سکیوریٹی کارڈ کی اجرائی کے عمل کا بہت جلد آغاز ہو جائے گا۔ محکمہ سیول سپلائز کے بموجب ریاست بھر میں 88لاکھ ایسے خاندانوں کی نشاندہی کی گئی ہے جو سطح غربت سے نیچے زندگی گذار رہے ہیں۔ ان تمام خاندانوں کو فوڈ سکیوریٹی کارڈ کی اجرائی یقینی بنائی جائے گی۔ ریاست تلنگانہ کی تشکیل سے قبل تلنگانہ کے 10اضلاع میں ایک کروڑ 47لاکھ راشن کارڈ موجود تھے جن میں 91لاکھ 94ہزار سفید راشن کارڈ کے علاوہ 15لاکھ 7ہزار گلابی راشن کارڈ شامل ہیں۔ حکومت تلنگانہ نے ارزاں فروشی کی دکانات کی جانب سے کی جانے والی دھاندلیوں کے خاتمہ کے علاوہ ان راشن کارڈ کو برخواست کرنے کیلئے میکانزم تیار کیا جو بوگس تھے ان راشن کارڈ کی تنسیخ کے بعد اب حکومت نے فوڈ سکیوریٹی کارڈ کی اجرائی کا فیصلہ کر لیا ہے اور اس سلسلہ میں کارڈس کی پرنٹنگ کا عمل بھی شروع کیا جا چکا ہے۔ ریاست تلنگانہ میں فوڈ سکیوریٹی کارڈ کی اجرائی سے قبل تیار کردہ میکانزم سے بتایا جاتا ہے کہ راشن کی اجرائی اور ضرورت مندوں کی ڈیجیٹل فہرست کے سبب دھاندلیوں کی گنجائش ختم ہو چکی ہے۔دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں کارڈ گیرندوں کے فنگر پرنٹس کے حصول کے بعد راشن سربراہ کیا جا رہا ہے اور اس راشن کی فراہمی کا ریکارڈ الکٹرانک طرز پر رکھا جانے لگا ہے۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے حدود میں موجود 1545ارزاں فروشی کی دکانات پر ای۔پوائنٹ فنگر پرنٹ سسٹم کام کر رہا ہے اور فوڈ سکیوریٹی کارڈ کی اجرائی کے بعد اس سسٹم میں مزید بہتری پیدا ہونے کا امکان ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ تاحال محکمہ سیول سپلائز کی جانب سے نشاندہی کردہ لاکھوںبوگس راشن کارڈس کی تنسیخ عمل میں لائی جا چکی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT