Monday , September 25 2017
Home / Top Stories / ۔600 کیوسیکس پانی قحط زدہ پونے کی تحصیلوں کو جاری

۔600 کیوسیکس پانی قحط زدہ پونے کی تحصیلوں کو جاری

LATUR, MAY 4 (UNI)- Shiv Sena chief Uddhav Thackeray addressing a public meeting after distributing water tankers and dust bins in drought affected Latur district on Wednesday. UNI PHOTO-70U

مختلف علاقوں کی حصہ داری پر تنازعہ، ایم این ایس کارکنوں کا پرتشدد احتجاج
پونے ۔ 4 مئی (سیاست ڈاٹ کام) ایم این ایس کی سخت مزاحمت کے درمیان ریاستی محکمہ آبپاشی نے آج 600 کیوسیکس پانی شہر کے کھڑک واسلہ ذخیرہ آب سے پڑوسی امدا پور اور ڈونڈ تحصیلوں کو جاری کردیا۔ یہ دونوں ضلع پانی کی شدید قلت کا شکار ہیں کیونکہ مہاراشٹرا میں خشک سالی کی صورتحال پائی جاتی ہے۔ ایک ٹی ایم سی پانی میں سے 600 کیوسیکس پانی پہلے مرحلہ میں جاری کردیا گیا ہے اور باقی پانی مرحلہ وار انداز میں امدا پور اور ڈونڈ تحصیلوں کیلئے جاری کیا جائے گا۔ اے اے کپولے سپرنٹنڈنگ انجینئر آبپاشی سرکل نے کہا کہ مقامی انتظامیہ اور محکمہ آبپاشی مکمل انتظامات کرچکے ہیں تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جاسکے کہ پانی اپنی مقررہ منزلوں پر پہنچ جائے۔ انہوں نے کہا کہ مقامی انتظامیہ اور محکمہ آبپاشی پہلے ہی تمام انتظامات مکمل کرچکا ہے تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ پانی اپنی منزلوں تک پہنچ جائے۔

اسٹرائکنگ فورس، فلائنگ اسکواڈ، ٹیکنیکل اسٹاف، پولیس اور محکمہ مالیہ کے عہدیدار گہری نگرانی کریں گے تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جاسکے کہ پانی غیرقانونی طور پر راستہ میں نہروں میں نہ چھوڑا جائے۔ کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے بچنے کیلئے پولیس فورس کھڑک واسلہ ذخیرہ آب کے پاس تعینات کی گئی ہے۔ کل ایم این ایس کارکنوں نے ریاستی محکمہ آبپاشی کے دفتر میں توڑپھوڑ کی تھی اور شہر کے آبی ذخیروں سے پانی کی شراکت داری کے بارے میں احتجاج کیا تھا جس کی وجہ سے پولیس کو ضلعی دفتر کے روبرو اپنا انتظام سخت کرنا پڑا تھا۔ ضلعی وزیر گریش باپٹ شہر کے علاقہ قصبہ میں موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عہدیداروں اور 10 ملازمین پولیس کو دفتر کے باہر تعینات کیا گیا ہے۔ سینئر انسپکٹر وشرام باغ پولیس اسٹیشن ہیمنت بھٹ نے کہاکہ پانی کھڑک واسلہ ذخیرہ آب سے انڈا پور اور ڈونڈ تحصیلوں کو جاری کرنے کا معاملہ ایم این ایس کارکنوں کے پرتشدد احتجاج کی وجہ سے گرم ہوگیا ہے جبکہ محتلف پارٹیوں کے کارپوریٹرس نے اس فیصلہ کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ اس سے پونے شہر میں پانی کی قلت کا مسئلہ مزید شدید ہوجائے گا۔

TOPPOPULARRECENT