Tuesday , October 24 2017
Home / Top Stories / ۔99 فیصد دیانتدار افراد پر آگ کے گولے برسائے گئے

۔99 فیصد دیانتدار افراد پر آگ کے گولے برسائے گئے

غریبوں پر معاشی بمباری، مودی کی ملک کو دو حصوں میں تقسیم کرنے کی کوشش: راہول
دھرم شالہ ( ہماچل پردیش ) ۔ 24 ۔ دسمبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : کانگریس نائب صدر راہول گاندھی نے وزیراعظم نریندر مودی پر تنقیدوں میں شدت پیدا کرتے ہوئے ملک کو امیر اور غریب میں تقسیم کرنے کا الزام عائد کیا ۔ انہوں نے نوٹ بندی کو نقد معیشت اور کسان و محنت کش طبقہ پر ’ آگ کے گولے برسانے ‘ سے تعبیر کیا ۔ راہول گاندھی نے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نریندر مودی نے نوٹوں پر امتناع کے فیصلہ سے ہماچل پردیش کی پہچان ختم کردی ۔ کیوں کہ ریاست میں باغبانی ، زراعت اور سیاحتی شعبہ کو بری طرح نقصان پہنچا ہے ۔ ہماچل کے بہادر سپاہیوں نے سرجیکل اسٹرائیک کیا اور مودی جی نے ایک نیا ڈرامہ رچا جہاں کرپشن پر سرجیکل اسٹرائیک کیا گیا ۔ ایک طرف بہادر سپاہیوں نے اپنے خون اور جان کی قربانی دی لیکن مودی جی نے کالا دھن اور کرپشن پر جو سرجیکل اسٹرائیک کیا وہ دراصل غریبوں ، کسان اور محنت کش طبقہ پر آگ کی بمباری اور معاشی بمباری تھی ۔ ملک کو امیر اور غریب میں تقسیم کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے راہول گاندھی نے کہا کہ مودی جی آپ نے ہندوستان کو دو حصوں میں تقسیم کرنے کی کوشش کی ۔ ایک طرف ایک فیصد دولت مند ہیں جو 50 خاندان پر مشتمل ہیں جن کے پاس خانگی طیارے ، عالیشان عمارتیں ہیں اور دوسری طرف 99 فیصد دیانتدار افراد ہیں جن میں کسان ، مزدور اور متوسط طبقہ کے افراد شامل ہیں جنہوں نے خون پسینے سے ملک کی تعمیر کی ۔ نریندر مودی ملک کے عوام کو تقسیم کرنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ راہول گاندھی نے کہا کہ دوسری عالمی جنگ میں ایک نیا طریقہ اختیار کیا گیا جہاں 25 منٹ میں آتشی بمباری کی جاتی اور ٹوکیو پر کی گئی اس بمباری میں ہیروشیما بمباری سے زیادہ لوگ ہلاک ہوئے ۔ اس انداز میں مودی جی نے بھی غریب کسان اور لیبر طبقہ پر آتشی بمباری کی یہ ان ایک فیصد افراد پر نہیں ہوئی جہاں94  فیصد کالا دھن رکھا ہوا ہے بلکہ ان ملک کے 99 فیصد غریب عوام پر کی گئی ۔۔

TOPPOPULARRECENT