Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / جی ایچ ایم سی حدود میں لاکھوں سیٹلرس کے نام فہرست رائے دہندگان سے حذف

جی ایچ ایم سی حدود میں لاکھوں سیٹلرس کے نام فہرست رائے دہندگان سے حذف

مرکزی و ریاستی الیکشن کمیشنوں کے علاوہ عدالت سے رجوع ہونے کا فیصلہ ، اتم کمار ریڈی
حیدرآباد ۔ 18 ۔ ستمبر : ( سیاست نیوز ) : صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی نے حکمران ٹی آر ایس پر گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے حدود میں واقع 17 لاکھ سٹیلرس کے ووٹ انتخابی فہرست سے نکال دینے کی سازش کرنے کا الزام عائد کیا ۔ ریاستی الیکشن کمیشن کے خلاف بھی مرکزی حکومت سے شکایت کرنے اور ضرورت پڑنے پر عدلیہ کا دروازہ کھٹکھٹانے کا اعلان کیا ۔ آج گاندھی بھون میں گریٹر حیدرآباد کی نمائندگی کرنے والے کانگریس کے قائدین بشمول صدر گریٹر حیدرآباد سٹی کانگریس کمیٹی مسٹر ڈی ناگیندر ضلع رنگاریڈی کانگریس کے صدر مسٹر کے ملیشم ورکنگ پریسیڈنٹ تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر ملو بٹی وکرامارک سابق وزیر داخلہ مسز سبیتا اندرا ریڈی سابق رکن پارلیمنٹ مسٹر ایم انجن کمار یادو سابق ارکان اسمبلی مسٹر ایم ششی دھر ریڈی مسٹر وشنووردھن ریڈی ، مسٹر سدھیر ریڈی ، سابق مئیر بنڈارو کارتیکا ریڈی ، سابق ڈپٹی مئیر راجکمار ، تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کے جنرل سکریٹریز کسم کمار ، لکشمن گوڑ کے علاوہ دوسرے قائدین نے شرکت کی ۔ بعد ازاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیپٹن اتم کمار ریڈی نے کہا کہ حکمران ٹی آر ایس اسٹیٹ الیکشن کمیشن سے ساز باز کرتے ہوئے گریٹر حیدرآباد کے 42 فیصد تقریبا 17 لاکھ سیٹلرس کے ووٹوں کو انتخابی فہرست سے نکال دینے کی سازش پر عمل کررہی ہے ۔ صرف حلقہ اسمبلی صنعت نگر سے 31 ہزار ووٹ نکالنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عام انتخابات 2014 میں سیٹلرس پر ٹی آر ایس کو ووٹ نہ دینے کا الزام عائد کرتے ہوئے انتقامی کارروائی کے طور پر ان کے ووٹ فہرست رائے دہندگان سے خارج کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ کانگریس پارٹی نے اس سلسلے میں اسٹیٹ الیکشن کمیشن سے شکایت کی ہے تاہم اسٹیٹ الیکشن کمیشن ریاستی حکومت سے سازباز کرتے ہوئے قواعد کی مکمل خلاف ورزی کررہی ہے ۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی نے کہا کہ ہائی کورٹ نے 15 دسمبر تک جی ایچ ایم سی کے انتخابات منعقد کرانے کی ریاستی حکومت کو ہدایت دی ہے ۔ ٹی آر ایس حکومت کی کارکردگی سے عوام ناراض ہے ۔ اس لیے مخالف ٹی آر ایس ووٹوں کو ووٹر لسٹ سے ہٹانے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر کانگریس کی شکایت پر اندرون تین چار دن اسٹیٹ الیکشن کمیشن کی جانب سے کوئی کارروائی نہیں کی گئی تو کانگریس پارٹی دہلی پہونچکر سنٹرل الیکشن کمیشن سے اس کی شکایت کرے گی ۔ اگر وہاں بھی انصاف نہ ملے تو عدلیہ سے رجوع ہوگی ۔۔

TOPPOPULARRECENT