Thursday , September 21 2017
Home / ہندوستان / 1993 بم دھماکوں کے مجرم کو عبوری راحت سے انکار ٹاڈا عدالت کے فیصلہ کو بامبئے ہائیکورٹ میں چیلنج

1993 بم دھماکوں کے مجرم کو عبوری راحت سے انکار ٹاڈا عدالت کے فیصلہ کو بامبئے ہائیکورٹ میں چیلنج

ممبئی۔/5فبروری، ( سیاست ڈاٹ کام ) بامبئے ہائی کورٹ نے 1993 میں سلسلہ وار بم دھماکوں کے مجرم ابراہیم موسیٰ چوہان کو جیل سے رہائی کیلئے عبوری راحت دینے سے انکار کردیا ہے جوکہ فی الحال فلمی اداکار سنجے دت کو اسلحہ سربراہ کرنے کی پاداش میں جیل کی سزا بھگت رہا ہے ۔ چوہان نے اپنے وکیل فرحان شاہ کے ذریعہ ہائیکورٹ سے رجوع ہوکر ممبئی کی ٹاڈا عدالت میں 10سالہ سزائے قید کی معافی کی منسوخی کو چیلنج کیا تھا جہاں اس کی عرضی پر قطعی فیصلہ معرض التواء ہے جس نے جیل سے رہائی کیلئے عبوری راحت دینے کی استدعا کی ہے۔ کارگذار چیف جسٹس وی کے تاہل رمنی اور جسٹس شالینی بھنسالکر جوشی پر مشتمل بنچ نے چوہان کی پیش کردہ عرضی کو سماعت کیلئے قبول کرلیا ۔ آئندہ سماعت کی تاریخ 31مارچ مقرر کی ہے۔ تاہم بنچ نے سزا یافتہ ملزم کو عبوری راحت دینے سے انکار کردیا۔ ابراہیم موسیٰ چوہان عرف بابا چوہان کو بہترین چال چلن پر 10سالہ سزائے قید کو معاف کردیا گیا تھا اور اسے نومبر 2015میں رہا کردیا گیا تھا۔ لیکن انسپکٹر جنرل ( محابس ) نے حال ہی میں معافی سزائے قید کو منسوخ کردیااور کہا تھا کہ ملزم ہائی کورٹ سے رجوع ہوسکتا ہے اگرچیکہ ٹاڈا عدالت نے موسیٰ کو 5سال کی سزائے قید سنائی تھی۔ لیکن جیل میں اس کے بہترین چال و چلن دیگر کاموں کے پیش نظر سزائے قید میں 18ماہ کی تخفیف کردی تھی۔ تاہم موسیٰ نے فلمی اداکار سنجے دت کی مثال پیش کرتے ہوئے کہا کہ سنجے دت کی سزائے قید کو جس طرح معاف کردیا گیا ہے اسے بھی یہ سہولت فراہم کی جائے۔

TOPPOPULARRECENT