Wednesday , September 20 2017
Home / دنیا / 30 ہزار انسانی اسمگلرس کیخلاف کارروائی اولین ترجیح

30 ہزار انسانی اسمگلرس کیخلاف کارروائی اولین ترجیح

یوروپی یونین پولیس سربراہ کا بیان ، پناہ گزین کی زبوں حالی پر تشویش
بروسیلز ۔ 6 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) ایک ایسے وقت جب ساری دنیا پر غرقاب کمسن شامی بچے ائیلان کُردی کی لرزہ خیز تصاویر کا صدمہ طاری ہے کہ یوروپی حکام نے انکشاف کیا ہے کہ پناہ گزینوں کی اسمگلنگ میں 30,000 افراد مشتبہ طور پر ملوث ہیں اور انسانی اسمگلنگ کے اس غیرانسانی کاروبار میں ملوث اسمگلرس کی بڑی فوج کے خلاف سخت کارروائی اُن (یوروپی حکام) کی اولین ترجیح ہوگی کیونکہ جنگ زدہ علاقوں سے یوروپ اور دیگر علاقوں کو منتقلی کے دوران ہوئے جان لیوا حادثات کیلئے ان اسمگلروں کو موردالزام ٹھہرایا جارہا ہے۔ عہدیداروں نے کہا ہے کہ یہ مہلک کاروبار کئی ارب امریکی ڈالر پر مشتمل ہے جو شام، افغانستان، اریٹیریا اور صومالیہ جیسے جنگ زدہ اور غریب ملکوں سے نقل مقام کرتے ہوئے یوروپ میں خوشحال زندگی کا خواب دیکھنے والے مصیبت زدگان کو اپنا آسان شکار بنا رہا ہے۔ یہ اسمگلرس غیرمنظم نیٹ ورک کے طور پر گمنام مقامات سے کاروبار چلاتے ہیں اور اب سوشیل میڈیا کا بڑے پیمانے پر استعمال کرتے ہوئے انتہائی منظم انداز میں مختلف راستوں سے مہاجرین کو بے رحم طریقوں سے منتقل کیا کرتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT