Thursday , October 19 2017
Home / Top Stories / کابل میں دوسرا بڑا خودکش حملہ، 20 ہلاک

کابل میں دوسرا بڑا خودکش حملہ، 20 ہلاک

کابل /7 اگست (سیاست ڈاٹ کام) پولیس یونیفارم میں ملبوس ایک خودکش بم بردار نے آج شام کابل میں واقع پولیس اکیڈمی کے باب الداخلہ کے باہر دھماکہ کیا، اس میں کم از کم 20 نئے بھرتی ہونے والے پولیس جوان ہلاک اور 25 زخمی ہوئے۔ افغان عہدہ داروں نے بتایا کہ دارالحکومت کابل میں آج یہ دوسرا بڑا حملہ ہے۔ حملہ آور اکیڈمی کے باہر انتظار کرنے والے نئے بھرتی ہوئے پولیس ملازمین کے گروپ میں گھس گیا اور خود کو دھماکہ سے اڑادیا۔ اس حملہ کی ذمہ داری کسی نے بھی قبول نہیں کی۔ قبل ازیں دن میں ایک دھماکو اشیاء سے لدی ٹرک کو اڑا دیا گیا، جس میں 15 افراد ہلاک ہوئے تھے۔ یہ ٹرک سرکاری کامپلیکس سے قریب اور کابل کے رہائشی علاقہ میں فوجی ٹھکانہ کے قریب دھماکہ سے اڑائی گئی۔ یہ دھماکہ دن کے ایک بجے ہوا، جس میں 240 افراد زخمی ہوئے۔ صدر افغانستان اشرف غنی نے اس حملہ کا مؤثر جواب دینے کا انتباہ دیا اور کہا کہ یہ حملے طالبان قیادت کے لئے جاری رسہ کشی سے عوام کی توجہ ہٹانے کے لئے کئے جا رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ہم افغانستان میں بہرحال امن لانے کے عہد کے پابند ہیں۔

 

کابل میںطاقتور ٹرک بم دھماکہ، 15 ہلاک
کابل ۔ 7 اگست (سیاست ڈاٹ کام) کابل میں ایک ٹرک بم دھماکے میں 15افراد ہلاک ہوگئے جبکہ زخمیوں کی تعداد زائد از 100 بتائی گئی ہے۔ یاد رہے کہ طالبان قائد ملا عمر کی موت کے اعلان کے بعد کابل میں ہونے والا یہ پہلا بڑا حملہ ہے جس کیلئے فی الحال کسی بھی فرد یا گروپ نے ذمہ داری قبول نہیں کی ہے جس سے یہ ظاہر ہوتا ہیکہ طالبان کی داخلی صفوں میں نئے قائد کی تقرری سے متعلق پائی جانے والی تلخیوں کے باوجود گرمائی حملوں کا آغاز کردیا گیا ہے۔ کابل سے قریب شاہ شہید نامی مقام پر ہوئے طاقتور ٹرک بم دھماکے میں ہلاک ہونے والوں میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔ دھماکہ کی شدت کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ شہر کے دوردراز علاقوں میں بھی عمارات کو نقصان پہنچا خصوصی طور پر کھڑکیوں کے شیشے چکناچور ہوگئے جبکہ سڑک پر ایک 10 میٹر گہرا گڑھا پڑ گیا جبکہ دھماکہ کے مقام سے قریب میں واقع عمارت ملبہ میں تبدیل ہوگئی۔ دریں اثناء کابل پولیس ترجمان عباداللہ کریمی نے میڈیا کو بتایا کہ زخمیوں کی تعداد 128 ہوگئی ہے۔

 

TOPPOPULARRECENT