Saturday , August 19 2017
Home / Top Stories / ۔2016 کا گرما سب سے گرم ترین موسم ہوسکتا ہے : محکمہ موسمیات

۔2016 کا گرما سب سے گرم ترین موسم ہوسکتا ہے : محکمہ موسمیات

نئی دہلی 21 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) ایسے وقت میں جبکہ ملک کے کئی علاقوں میں درجہ حرارت معمول سے زیادہ درج کیا جا رہا ہے محکمہ موسمیات نے آج کہا کہ 2016 کا گرما در اصل سب سے گرم ترین موسم ہوسکتا ہے ۔ محکمہ موسمیات کے ڈائرکٹر جنرل لکشمن سنگھ راتھوڑ نے کہا کہ اب تک ریکارڈز کے مطابق 2015 سب سے گرم ترین سال رہا تھا ۔ ہماری پیش قیاسی میںپہلے ہی معمول سے زیادہ درجہ حرارت کا تذکرہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر آپ اب تک کے موسم گرما کے درجہ حرارت کا جائزہ لیں تو 2016 کا گرما سب سے گرم ترین موسم ہوسکتا ہے ۔ اس گرمی کیلئے ایل نینو عنصر کو ذمہ دار سمجھا جا رہا ہے تاہم کہا گیا ہے کہ اس کا اثر آئندہ چند ماہ میں ختم ہوجائیگا ۔ انہوں نے کہا کہ ایل نینو کے جوطاقتور اثرات 2015 میں بحر اوقیانوس میں شروع ہوئے تھے ان کا سلسلہ ہنوز جاری ہے ۔ تاہم تازہ ترین پیش قیاسی میں یہ اشارہ ملتا ہے کہ یہ اثرات اب مزید کمزور ہوسکتے ہیں اور 2016 کے شدید گرم موسم میں اس کی شدت ختم ہوسکتی ہے ۔ محکمہ موسمیات کی جانب سے پہلے ہی پیش قیاسی کی جاچکی ہے کہ موسم گرما میں درجہ حرارت معمول سے زیادہ ہوسکتا ہے ۔ ملک کے کئی حصوں میں گرمی کی لہر جیسا ماحول پیدا ہوگا ۔ امریکہ میں قومی بحری و ماحولیاتی انتظامیہ کی جانب سے مارچ 2016 کو اب تک کا سب سے گرم ترین مارچ قرار دیا گیا ہے ۔ عالمی سطح پر بھی یہ سال سب سے گرم ہونے کی امید ہے ۔

 

چاند ‘ آج جسامت میں
چھوٹا نظر آئے گا
کولکتہ 21 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) کل 14 ویں رات کے موقع پر چاند اپنی جسامت میں چھوٹا رہیگا ۔ اس کو چھوٹا چاند کہا جاتا ہے اور ایسا فلکیاتی مشاہدہ ہر 15 سال میں ایک مرتبہ کیا جاسکتا ہے ۔ کہا گیا ہے کہ آج رات 9.35 بجے چاند اپنے مدار میں زمین سے انتہائی فاصلہ پر ہوگا ۔ یہ فاصلہ 4,06,350 کیلومیٹر کا ہوسکتا ہے ۔ عموما چاند اپنے مدار میں زمین سے 3,84,000 کیلومیٹر کے فاصلہ پر ہوتا ہے ۔ ڈائرکٹر ایم پی برلا پلانیٹوریم کولکتہ دیبی پروساد داؤری نے بتایا کہ کل جب مکمل چاند ہوگا وہ زمین سے انتہائی فاصلہ پر ہوگا اور ایسے میں یہ اوسط سے چھوٹا چاند نظر آئیگا ۔

 

اُڈیشہ میں گرمی کی لہر جاری
سونے پور میں درجہ حرارت 46.2
بھوبنیشور ، 21 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) اُڈیشہ کے اکثر حصوں کو شدید گرمی کی لہر نے لپیٹ میں لے رکھا ہے، بالخصوص مغربی خطہ جہاں تیتلاگڑھ 46.5 ڈگری سلسیس کے ساتھ اس ریاست کا گرم ترین مقام بنا ہے۔ درجہ حرارت ریاست کے کم از کم 10 مقامات پر 44 ڈگری سلسیس کے نشان کو عبور کرگیا اور زائد از 17 مقامات میں 40 ڈگری سلسیس سے زیادہ ریکارڈ کیا گیا اور بُری خبر یہ ہے کہ انڈیا مٹیورولوجیکل ڈپارٹمنٹ (آئی ایم ڈی) نے مزید سخت تر دِنوں کی پیش قیاسی کی ہے۔ آئی ایم ڈی کے بلیٹن میں بتایا گیا کہ اس ریاست میں جہاں تیتلاگڑھ سب سے گرم مقام بن گیا، وہیں قریبی سونے پور نے 46.2 ڈگری ریکارڈ کیا گیا، جس کے بعد ہیراکڈ میں 45.6 ڈگری، بولانگیر میں 45.5 ڈگری اور جھرسوگوڑہ میں 45.3 ڈگری سلسیس رہا۔

TOPPOPULARRECENT