Friday , September 22 2017
Home / Top Stories / نوجوت سنگھ سدھو کیلئے عام آدمی پارٹی ہی واحد راستہ

نوجوت سنگھ سدھو کیلئے عام آدمی پارٹی ہی واحد راستہ

سابق ایم پی کی بیوی کا بیان۔ کیرتی آزاد کی اہلیہ بھی عاپ کی طرف مائل، کانگریس سدھو کو پارٹی میں شامل کرنے تیار

چندی گڑھ ؍ نئی دہلی 19 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) کرکٹر سے سیاستداں بننے والے نوجوت سنگھ سدھو کی شریک حیات نوجوت کور نے آج کہاکہ راجیہ سبھا سے سدھو کے استعفے کا مطلب ہے کہ وہ بی جے پی بھی چھوڑ چکے ہیں اور اُن کے لئے عام آدمی پارٹی میں شمولیت ہی واحد راستہ ہے۔ راجیہ سبھا کی رکنیت سے مستعفی ہوکر پنجاب میں بی جے پی کو نوجوت سدھو کی جانب سے جھٹکہ لگائے جانے کے ایک روز بعد اُن کی ایم ایل اے اہلیہ نوجوت کور نے کہاکہ سدھو کا اپنے فیصلہ سے واپسی کا کوئی سوال ہی نہیں۔ نوجوت کور امرتسر ۔ ایسٹ حلقہ کی ایم ایل اے اور شرومنی اکالی دل ۔ بی جے پی حکومت میں چیف پارلیمنٹری سکریٹری (ہیلتھ) ہیں۔ انھوں نے کہاکہ میرے خیال میں نوجوت سدھو نے نہایت واضح پیام دے دیا ہے کہ وہ کیا کرنے والے ہیں اور آنے والے دنوں میں اُنھیں اپنے مستقبل کے منصوبوں کا اظہار کرنے دیجئے۔ وہ کہہ چکے ہیں کہ اُنھیں پنجاب کی خدمت کرنا ہے اور عام آدمی پارٹی کے راستے کے سوا کوئی متبادل نہیں۔ بی جے پی میں اُن کے شوہر کے موجودہ موقف کے تعلق سے پوچھنے پر نوجوت کور نے کہاکہ جب وہ راجیہ سبھا سے مستعفی ہوچکے ہیں تو اِس کا مطلب ہے بی جے پی بھی چھوڑ چکے ہیں۔

اِس دوران معطل بی جے پی ایم پی کیرتی آزاد کی اہلیہ اور پارٹی قومی عاملہ کی تین مرتبہ کی رکن پونم آزاد امکان ہے نوجوت سدھو کے نقش قدم پر چلیں گی۔ اُن کے قریبی ذرائع نے کہاکہ پونم عنقریب مستعفی ہوکر عام آدمی پارٹی میں شامل ہوجائیں گی۔ وہ موجودہ طور پر دہلی بی جے پی کی ترجمان ہیں اور اِس سے قبل نائب صدر رہ چکی ہیں۔ پونم آزاد کو بی جے پی قومی عاملہ کی تین مرتبہ رکن رہنے کے بعد چند برسوں سے پارٹی میں مسلسل حاشیہ پر رکھے جانے کا گلہ ہے۔ اُن کے فیصلہ کی ایک وجہ کیرتی آزاد کی معطلی بھی ہے جنھوں نے وزیر فینانس ارون جیٹلی پر ڈی ڈی سی اے میں مبینہ کرپشن کے معاملہ میں شدید مہم چھیڑ رکھی تھی۔

جیٹلی ڈی ڈی سی اے کے سربراہ رہ چکے ہیں اور بتایا جاتا ہے کہ اُن دنوں کے حالات پر کیرتی نے سخت نکتہ چینی کی ہے اور پارٹی سربراہ امیت شاہ کی مداخلت کے باوجود اپنی مہم جاری رکھی تھی چنانچہ اُنھیں پارٹی سے معطل کردیا گیا۔ اس دوران پنجاب کانگریس کے صدر امریندر سنگھ نے کہا کہ سابق بی جے پی رکن پارلیمنٹ نوجوت سنگھ سدھو اگر کانگریس میں شامل ہونا چاہئیں تو ان کا خیرمقدم کیا جائے گا۔ انہوںنے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس کے دروازے ہر ایک کیلئے کھلے ہیں، تاہم انہوں نے بتایا کہ سدھو سے ان کی کوئی بات نہیں ہوئی ۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ کانگریس لیڈر کا سدھو سے ربط ہوا ہے ، تو انہوں نے جواب دیا کہ انہیں اس بات کا کوئی علم نہیں۔ سدھو کا تعلق پٹیالہ سے ہے اور ان کے والد آنجہانی بھگونت سنگھ سدھو کانگریس پس منظر رکھتے ہیں اور وہ ڈسٹرکٹ کانگریس کمیٹی کے عہدیدار بھی تھے۔ امریندر سنگھ نے بتایا کہ جس وقت ان کی ماں پٹیالہ ڈسٹرکٹ کانگریس کمیٹی کی صدر تھیں ، تب سدھو کے والد جنرل سیکریٹری تھے۔

 

کجریوال کے خلاف سدھو کے
ویڈیو کلپس کی گشت
چندی گڑھ 19 جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) سابق رکن پارلیمنٹ نوجوان سنگھ سدھو کی عام آدمی پارٹی میں شمولیت کی اطلاعات کے دوران ایسے ویڈیوز سوشیل میڈیا پر پھیلنے شروع ہوگئے ہیں جن میں سدھو نے عام آدمی پارٹی سربراہ اروند کجریوال کا مضحکہ اڑایا ہے ۔ ایک دن قبل ہی سدھو نے راجیہ سبھا کی رکنیت سے استعفی پیش کردیا تھا ۔ ایسا لگتا ہے کہ یہ ویڈیوز 2014 کے دہلی اسمبلی انتخابات کے دوران شوٹ کئے گئے تھے ۔ ان میں دکھایا گیا ہے کہ سدھو عام آدمی پارٹی قومی کنوینر کجریوال کا مضحکہ اڑا رہے ہیں اور انہیں نوٹنکی کمپنی والا کجریوال قرار دے رہے ہیں۔ ایک ویڈیو میں سدھو کو یہ کہتے ہوئے دکھایا گیا ہے کہ ’’ نوٹنکی کمپنی والا کجریوال صاحب ‘ میں سیاست کبھی جوائن نہیں کرونگا ‘ عام آدمی پارٹی بنا دی ۔ میں سکیوریٹی نہیں لونگا ‘ Z پلس سکیوریٹی لے لی ۔ میں کبھی بنگلہ نہیں لونگا ‘ بنگلے میں خود جھاڑو مارنے لگ گئے ۔ بنگلہ لے لیا ۔ میں کوئی جھوٹ بول رہا ہوں ؟ ۔ ایک اور ویڈیو میں سدھو کو کجریوال کی مسلسل کھانسی پر بھی طنز کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ’’ ادھر دھرنا ۔ ادھر دھرنا ۔ تجھے کھانسی تو ٹھیک نہیں ہوئی ۔ دہلی کیا ٹھیک کریگا ۔ کیا میں نے جھوٹ بولا ہے ‘‘ ۔ ایک اور ویڈیو میں انہوں نے کہا کہ کجریوال ہر جگہ سے بھاگ رہے ہیں۔ نوکری چھوڑ کر بھاگے ۔ دہلی چھوڑ کر بھاگے ۔ جو شخص انا ہزارے کا نہیں ہوسکا وہ تمہارا ( دہلی کے عوام کا ) کیسے ہوگا ۔

 

سدھو کے تعلق سے کہنا ابھی
قبل ازوقت : کجریوال
نئی دہلی 19 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال نے آج بظاہر یہ کہنے کی کوشش کی کہ نوجوت سنگھ سدھو کا پنجاب میں عام آدمی پارٹی کی شناخت بن جانا ابھی قبل ازوقت بات ہے لیکن اُنھوں نے بی جے پی لیڈر کی راجیہ سبھا سے مستعفی ہوجانے کی جرأت مندی کو سراہا۔ پنجاب کے آئندہ سال مقررہ ریاستی اسمبلی کے انتخابات میں سدھو کو عام آدمی پارٹی کا وزارت اعلیٰ امیدوار بنانے کے امکان پر کجریوال نے تبصرہ کیاکہ ایسا کچھ نہیں ہے۔ اُنھوں نے بس ابھی راجیہ سبھا کی نشست سے استعفیٰ دیا ہے اور میں سمجھتا ہوں کہ تمام اچھے لوگوں کو بی جے پی سے مستعفی ہوجانا چاہئے۔ میں اُن کی ہمت کی داد دیتا ہوں۔

TOPPOPULARRECENT