Tuesday , August 22 2017
Home / Top Stories / آیت اللہ خامنہ ای کے حامی سخت مقابلے کے باوجود روحانی کو سبقت

آیت اللہ خامنہ ای کے حامی سخت مقابلے کے باوجود روحانی کو سبقت

تہران ۔ 19 مئی (سیاست ڈاٹ کام) مغرب کے ساتھ مذاکرات کے حامی ایرانی صدر حسن روحانی کو صدارتی انتخاب میں قدامت پسند امیدوار ابراہیم رئیسی کی طرف سے سخت مقابلے کا سامنا ہے۔ رئیسی ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای کے معتمد خاص تصور کیے جاتے ہیں۔ایرانی ٹیلی وڑن پر دکھائے جانے والے مناظر میں ایران کے مختلف شہروں میں قائم پولنگ اسٹیشنوں پر بڑی تعداد میں لوگوں کو قطاروں میں کھڑے دیکھا جا سکتا ہے۔ آج کے صدارتی انتخاب میں ایران کی 80 ملین سے زائد کی آبادی میں سے 56 ملین کے قریب شہری اپنا حق رائے دہی استعمال کرنے کے اہل ہیں۔ تہران میں ووٹ ڈالنے کے بعد ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای نے عوام کو تلقین کی ہے کہ وہ ہر قیمت پر اپنا حقِ رائے دہی استعمال کریں کیونکہ ملک کا مقدر عوام کے ہاتھ میں ہے۔ صدارتی الیکشن کے لیے ووٹ مقامی وقت کے مطابق شام چھ بجے تک ڈالے جا سکیں گے۔ڈالے گئے ووٹوں کی گنتی تقریباً نصف شب کے قریب شروع ہو گی اور انتخابی نتائج اگلے چوبیس گھنٹوں میں عام کر دیے جائیں گے۔ ایران میں ہونے والے صدارتی انتخاب میں غیر متوقع طور پر صدر حسن روحانی کو اپنے حریف امیدوار ابراہیم رئیسی کی طرف سے سخت مقابلے کا سامنا ہے۔

TOPPOPULARRECENT