Monday , December 11 2017
Home / شہر کی خبریں / آبپاشی پراجکٹس پر اسمبلی میں مباحث سے اپوزیشن کی راہ فراری

آبپاشی پراجکٹس پر اسمبلی میں مباحث سے اپوزیشن کی راہ فراری

چیف منسٹر کے سی آر کی شفاف کارکردگی ، شہداء تلنگانہ کے لواحقین کو امداد
حیدرآباد۔ 4 ۔ اپریل ( سیاست نیوز) ٹی آر ایس رکن پارلیمنٹ کویتا نے الزام عائد کیا کہ آبپاشی پراجکٹس کے مسئلہ پر اسمبلی میں مباحث سے اپوزیشن نے راہ فرار اختیار کی ہے۔ تلنگانہ بھون میں تلنگانہ تحریک کے دوران جانوں کی قربانی دینے والے افراد کے لواحقین کو امداد کی فراہمی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کویتا نے اپوزیشن کانگریس اور تلگو دیشم کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی تاریخ میں پہلی مرتبہ کسی چیف منسٹر نے شفاف طریقہ سے آبپاشی پراجکٹس پر پاور پوائنٹ پریزینٹیشن پیش کیا جس کا مقصد نئے پراجکٹس کی تعمیر اور مجوزہ خرچ کی تفصیلات سے واقف کرانا تھا۔ کویتا نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ تلنگانہ میں ایک کروڑ ایکر اراضی کو پانی سیراب کرنے کا عہد کرچکے ہیں۔ کے سی آر نے تلنگانہ کے حصول کیلئے اپنی جان کی پرواہ نہیں کی اور اب وہ سنہرے تلنگانہ کی تشکیل کیلئے کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پراجکٹس کے ڈیزائین میں تبدیلی کا مقصد زائد علاقوں کو پانی سیراب کرنا ہے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ اپوزیشن جماعتیں  غیر ضروری الزام تراشی کے ذریعہ پراجکٹس کی تکمیل میں رکاوٹ پیدا کرنا چاہتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسمبلی میں تجاویز پیش کئے بغیر اسمبلی کے باہر چیف منسٹر کے خلاف الزام تراشی کی جارہی ہے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ کانگریس دور حکومت  میں بے قاعدگیاں کی گئی۔ کویتا نے کہا کہ ٹی آر ایس اپنے تمام کارکنوں کی بھلائی کیلئے اقدامات کرے گی۔ انہوں نے بتایا کہ ابھی تک 274 شہیدان تلنگانہ کے افراد خاندان کو فی کس دو لاکھ روپئے کی امداد حوالے کی گئی ہے۔ جبکہ تمام کارکنوں کے لئے انشورنس اسکیم متعارف کی گئی۔

TOPPOPULARRECENT