Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / آتشیں اسلحہ صرف 2000 روپئے میں دستیاب

آتشیں اسلحہ صرف 2000 روپئے میں دستیاب

غیرقانونی ہتھیاروں کے ساتھ شہر میں مجرمین کے داخلہ سے پولیس کو تشویش
حیدرآباد ۔ 22 اگست (ایجنسیز) غیرقانونی آتشیں اسلحہ زیادہ تر دیسی ساختہ گنس اور پستولس نوجوان مجرمین کیلئے ایسا معلوم ہوتا ہیکہ ایک کام کی چیز بن گئے ہیں کیونکہ یہ قابل گنجائش قیمتوں میں تیار دستیاب ہورہے ہیں۔ ایک دیسی ساختہ ہتھیار کو ملک بھر میں کہیں بھی 2,500 روپئے سے کم قیمت میں خریدا جاسکتا ہے۔ غیرقانونی ہتھیاروں کے ساتھ بین ریاستی مجرمین کا شہر میں داخلہ پولیس کیلئے تشویش کا باعث ہے بالخصوص ٹوئن پولیس کمشنریٹ حدود میں جہاں ان کی خدمات ریئل اسٹیٹ مافیا کی جانب سے طلب کی جاتی ہیں۔ ٹاسک فورس کے عہدیداروں نے بتایا کہ پہلی مرتبہ جرم کا ارتکاب کرنے والے مجرمین اور نوجوانوں کیلئے دیسی ساختہ پستولس ان کی پسند کا ہتھیار بن گئے ہیں کیونکہ اس طرح کے ہتھیاروں کا کھوج لگانا اور جرم یا مجرمین کو ان سے جوڑنا تقریباً ناممکن ہوتا ہے جب تک ان کی انگلیوں کے نشان ہتھیار پر نہیں ہوں۔ اس سال اپریل میں تلگو فلم ڈائرکٹر اور پروڈیوسر بیجم راجیش پترا کو ان کے قبضہ سے دیسی ساختہ دو 9mm پستولس اور 16 راونڈس کو ضبط کرنے کے بعد گرفتار کیا گیا تھا۔ انہوں نے بعد میں قبول کیا کہ انہوں نے 2010ء میں بہار سے ان ہتھیاروں کو خریدا تھا۔ اسی ماہ میں ٹاسک فورس کے عہدیداروں نے جھارکھنڈ کے متوطن محمد افتخار انصاری کو علاقہ گولکنڈہ میں برنداون کالونی میں گرفتار کیا۔ تفتیش کے دوران یہ انکشاف ہوا کہ انہوں نے بہار میں رہنے والے ان کے دوست سے دیسی ساختہ ہتھیار کو 5,000 روپئے میں خریدا تھا۔ پھر مئی میں ایک اور پہلی مرتبہ جرم کا ارتکاب کرنے والے شیوا نے ایس آر نگر میں ایک سافٹ ویر پروفیشنلس کو دھمکانے اور ان کے زیورات اور رقم لوٹ لینے کیلئے ایک دیسی ساختہ پستول کا استعمال کیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT