Monday , January 22 2018
Home / شہر کی خبریں / آخرت میں کامیابی کے لیے عربی زبان کے حصول کی جدوجہد ناگزیر

آخرت میں کامیابی کے لیے عربی زبان کے حصول کی جدوجہد ناگزیر

دفتر سیاست میں عربی زباندانی و قرآن فہمی کورس کا آغاز ، مختلف شخصیتوں کا خطاب

دفتر سیاست میں عربی زباندانی و قرآن فہمی کورس کا آغاز ، مختلف شخصیتوں کا خطاب
حیدرآباد۔8ڈسمبر(سیاست نیوز) ادارہ سیاست کی دینی اور ملی خدمات پر اظہار تشکر کرتے ہوئے ڈاکٹراشرف علی جائسی نے کہاکہ ادارہ سیاست اور اس کے ذمہ داران نے جو دینی اور ملی خدمات کا بیڑہ اٹھایا ہے وہ قابل ستائش اقدام ہے۔ کل یہاں احاطہ سیاست کے گولڈن جوبلی ہال میں ادارہ سیاست کے زیراہتمام شروع کی گئی عربی زبان دانی ‘ اور قرآن فہمی چھ ماہی مفت کورس کے آغاز پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آخرت میں کامیابی کے لئے عربی زبان پر عبور لازمی ہے ۔ انہوں نے انگریزی زبان کو دنیا میں کامیابی حاصل کرنے کا ذریعہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ جس طرح انسان دنیا میں کامیابی کے لئے انگریزی زبان پر عبور حاصل کرنے کی جستجو کرتا ہے اسی طرح آخرت میںکامیابی کے لئے عربی زبان کے حصول کی جدوجہد ناگزیر ہے۔ڈاکٹر سیدعلی اشرف جائسی نے کہا کہ دن میں پانچ بار اللہ کے روبروکھڑے ہوکراللہ تعالی سے شرف گفتگو بخشنے والی زبان کو سمجھنے سے ہم قاصر ہیں۔عربی جنت والوں کی زبان ہے اور عربی کاسیکھنا اور زبان عربی سے محبت کرنا اللہ تعالی اور رسول اللہؐ سے محبت کی دلیل ہے۔انہوں نے عربی زبان دانی اور قرآن فہمی کے مفت کورس کے آغازپرادارہ سیاست اور منتظمین کو دل کی گہرائیوں سے مبارکباد پیش کی ۔ مولانا رضوان پاشاہ قادری نے کہاکہ روزگار کا حصول انسان کی بنیادی ضرورتوں کی تکمیل کے لئے لازمی ہے۔ عربی زبان پر عبور رکھنے والوں کے لئے مختلف شعبوں میںکئی مواقع فراہم کئے جارہے ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ کالجس اور اسکولس میں عربی کو دوسری اور تیسری زبان کا درجہ فراہم کیا جارہا ہے جس سے عربی لکچررس اور ٹیچرس کی طلب میں بھی دن بہ دن اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ انہوں نے حکومت تلنگانہ سے بھی توقع ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ چیف منسٹر تلنگانہ نے اسکولس میںبھی عربی زبان کو نمایاں مقام فراہم کرنے کا وعدہ کیا ہے اور امید ہے کہ آئندہ سال سے تلنگانہ کے سرکاری اسکولس میںبھی عربی زبان کو دوسری زبان کا درجہ فراہم کیا جائے گا۔ ڈاکٹر شجاع الدین نے تقریب کی کارروائی چلائی ۔ اس موقع پرجناب ظہیر الدین علی خان کے علاوہ عربی زبان دانی اور قرآن فہمی سیکھنے میں دلچسپی رکھنے والے سینکڑوں مرد وخواتین بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT