Tuesday , November 21 2017
Home / Top Stories / آدتیہ ناتھ کا متنازعہ ریمارک، شاہ رخ خان کا حافظ سعید سے تقابل

آدتیہ ناتھ کا متنازعہ ریمارک، شاہ رخ خان کا حافظ سعید سے تقابل

حکومت پر تنقید کرنے والوں کو پاکستان چلے جانے کا مشورہ دینے والے کیا پاکستانی سیاحت کی تشہیر کررہے ہیں : کانگریس
نئی دہلی ۔ 4 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کے متنازعہ رکن پارلیمنٹ یوگی آدتیہ ناتھ نے آج بالی ووڈ سوپراسٹار شاہ رخ خان کا ملک میں عدم رواداری سے متعلق ان کے ریمارک پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ممبئی دہشت گرد حملوں کے اصل سازشی سرغنہ پاکستانی دہشت گرد حافظ سعید سے تقابل کیا۔ شاہ رخ خان پر گذشتہ دو دن کے دوران یہ دوسرے بی جے پی رکن پارلیمنٹ کی تنقید ہے جس کی مختلف گوشوں سے سخت مذمت کی جارہی ہے۔ شاہ رخ خان نے ملک میں بڑھتی ہوئی عدم رواداری کے معمول کے خلاف دانشوروں اور فنکاروں کے احتجاج کی حمایت کی تھی۔ آدتیہ ناتھ نے آج متنازعہ ریمارک کرتے ہوئے کہا کہ انہیں (شاہ رخ خان کو) پاکستان چلے جانا چاہئے۔ گورکھپور کے بی جے پی رکن پارلیمنٹ آدتیہ ناتھ نے ایک اور متنازعہ ریمارک کرتے ہوئے کہا کہ اگر ملک کے عوام ان کے فلموں کا بائیکاٹ کریں تو وہ ’ایک عام مسلمان‘ کی طرح سڑکوں پر گھومنے کیلئے مجبور ہوجائیں گے۔ بی جے پی کے ایک سینئر لیڈر وجئے ورگیہ نے بھی گذشتہ روز متنازعہ ریمارک کیا تھا لیکن آج اپنے ریمارک کو واپس لے لیا۔

اس دوران بی جے پی نے بھی شاہ رخ کے خلاف متنازعہ ریمارک سے بے تعلقی کا اظہار کیا ہے۔ آدتیہ ناتھ نے دعویٰ کیا کہ انقلابی نظریات کے حامل بعض فنکار اور مصنفین  سیکولرازم کے نام پر قوم دشمن عناصر کی طرح بات کرنے لگے ہیں اور شاہ رخ خان بھی ان کی تائید کرتے ہوئے ان ہی کی آواز میں بات کررہے ہیں۔ آدتیہ ناتھ نے کہا کہ ’’میں یہ کہنا چاہتا ہوں کہ یہ لوگ دہشت گردی کی زبان میں بات کررہے ہیں اور میں سمجھتا ہوں کہ شاہ رخ خان اور حافظ سعید کی زبان میں کوئی فرق نہیں ہے۔ کانگریس نے آدتیہ ناتھ کے بیان کی سخت مذمت کی اور کہا کہ اس قسم کے اشتعال انگیز بیانات سے کشیدگی میں اضافہ ہوگا۔ کانگریس کے ایک سینئر لیڈر ٹام وڈکن نے کہا کہ ’’یہ ایک انتہائی قابل مذمت بیان ہے۔ اگر آپ اس ملک کی انتظامیہ کے خلاف نظریات کا اظہار کرتے ہیں تو کوئی ٹوئیٹر پر یہ یہ لکھ دیتا ہے کہ تنقید کرنے والے پاکستان چلے جائیں۔ کیا یہ لوگ پاکستانی سیاحت کو فروغ دینے کی کوشش کررہے ہیں؟‘‘۔
شاہ رخ خان کو محض مسلمان ہونے
پر نشانہ بنانے کی مخالفت : شیوسینا
ممبئی ۔ 4 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کے بعض گوشوں کے تنقیدی حملوں کے شکار بالی ووڈ اسٹار شاہ رخ خان کو آج مہاراشٹرا میں حکمراں حلیف شیوسینا سے اس وقت تائید حاصل ہوگئی جب اس پارٹی نے کہا کہ شاہ رخ خان کو محض اس لئے نشانہ نہیں بنایا جانا چاہئے کہ وہ ایک مسلمان ہے اور یہ کہ ہندوستان میں اقلیتی طبقہ روادار ہے۔ شیوسینا کے رکن پارلیمنٹ سنجے راوت نے کہا کہ ’’یہ ملک روادار ہے اور مسلمان بھی روادار ہیں۔ شاہ رخ خان کو محض مسلمان ہونے کے سبب نشانہ نہیں بنایا جانا چاہئے‘‘۔

TOPPOPULARRECENT