Saturday , December 15 2018

آدھار کارڈ کو مربوط کرنے کی مہلت میں توسیع

غیرمعینہ مدت تک مہلت برقرار ،سپریم کورٹ کا فیصلہ
نئی دہلی۔ 13 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے آدھار کو مختلف خدمات سے مربوط کرنے کیلئے 31 مارچ تک دی گئی مہلت میں آج توسیع دی ہے اور کہا کہ اس بائیومیٹرک نظام سے مختلف خدمات کو مربوط کرنے کے فیصلے کو چیلنج کرتے ہوئے دائر کردہ درخواستوں پر پانچ رکنی دستوری بینچ کی طرف سے فیصلے کے اعلان تک یہ توسیع برقرار رہے گی۔ چیف جسٹس دیپک مصرا کی قیادت میں پانچ رکنی دستوری بینچ نے 7 مارچ کو کہا تھا کہ آدھار قانون کے دستوری جواز کو چیلنج کرتے ہوئے دائر کردہ مختلف درخواستوں پر 31 مارچ تک فیصلہ کرنا ممکن نہ ہوگا۔ اس بینچ نے جس میں جسٹس اے کے سیکری، جسٹس اے ایم کھانویلکر، جسٹس ڈی وائی چندرا چوڑ اور جسٹس اشوک بھوشن بھی شامل ہیں، پہلے کہا تھا کہ اس معاملے کا اثر بینکوں اور اسٹاک ایکسچینج جیسے مالیاتی اداروں پر بھی مرتب ہوگا اور مہلت میں اگر لمحہ آخر میں توسیع کی جاتی ہے تو اس پر پابندی کیلئے کئی پیچیدہ مسائل پیدا ہوں گے۔ عدالت عظمیٰ نے گزشتہ سال 15 ڈسمبر کو آدھار کو مختلف خدمات سے مربوط کرنے کیلئے 31 مارچ تک مہلت میں توسیع دی تھی۔ کرناٹک ہائیکورٹ کے ایک سابق جج جسٹس کے ایس پٹا سوامی نے 22 فروری کو عدالت عظمیٰ سے کہا تھا کہ آدھار پر مبنی عوامی نظام تقسیم میں مختلف خامیوں اور پیچیدگیوں کے سبب کئی افراد کی فاقہ کشی سے اموات کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں اور انہیں معاوضہ کی ادائیگی پر عدالت کو غور کرنا چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT