Friday , October 19 2018
Home / شہر کی خبریں / آدھار کارڈ کے عدم اندراج پر گیاس سربراہی مسدود

آدھار کارڈ کے عدم اندراج پر گیاس سربراہی مسدود

صارفین کو پریشانی، سپریم کورٹ احکامات کی خلاف ورزی

حیدرآباد۔28جنوری(سیاست نیوز) خدمات کو آدھارسے مربوط کرنے کیلئے سپریم کورٹ کی جانب سے دی گئی 31 مارچ تک کی مہلت کے باوجود ملک میں پکوان گیس کے حصول میں مشکلات پیش آنے لگی ہیں اور ملک کی مختلف ریاستوں میں گیس کمپنیوں نے اپنے صارفین کے گیاس کنکشن آدھار سے مربوط نہ کرنے کے سبب روک دیئے ہیں اور ان کی جانب سے گیاس بک کروائے جانے پر مطلع کیا جا رہا ہے کہ انہیں گیاس سربراہ نہیں کی جائے گی کیونکہ ان کے کنکشن آدھار سے مربوط نہیں ہیں۔سپریم کورٹ نے تمام سرکاری اسکیمات اور آدھار سے مربوط خدمات کو 31مارچ تک جاری رکھنے کے احکام جاری کئے تھے لیکن اس کے باوجود گیس کی سربراہی میں پیدا ہونے والے مسائل سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ان احکام پرتیل کمپنیاں جو گیس کی فراہمی یقینی بناتی ہیں وہ عمل کرنا نہیں چاہتی۔انڈین آئیل کارپوریشن کے عہدیداروں کا کہناہے کہ اس بات کی شکایات موصول ہو رہی ہیں کہ بعض صارفین کو گیس بکنگ میں مشکلات پیش آرہی ہیں ۔عہدیداروں نے بتایا کہ سابق میں موجود 31ڈسمبر قطعی تاریخ کے سبب شائد گیس صارفین کو پیغام موصول ہوئے ہیں کہ ان کے کنکشن روک دیئے گئے ہیں لیکن کمپنی نے کوئی ایسا فیصلہ نہیں کیا ہے۔ آدھار کو لازمی مربوط کرنے کے سلسلہ میں سرکاری احکامات پر سپریم کورٹ نے 31مارچ تک توسیع فراہم کی ہے اور ملک میں لاکھوں صارفین نے اب تک بیشتر خدمات سے آدھار مربوط نہیں کیا ہے۔ گیس کمپنیوں کا کہنا ہے کہ ریاست کرناٹک ‘ کیرالا اور تمل ناڈو سے اس طرح کی شکایات موصول ہوئی ہیں جن کا جائزہ لیا جارہاہے ۔ شکایت کرنے والے صارفین کا کہنا ہے کہ انہیں ماہ جنوری کے دوران اپنے گیس سلنڈر بک کروانے میں مشکلات پیش آرہی ہیں اور انہیں ایس ایم ایس کے ذریعہ پیغام بھی موصول ہورہے ہیں کہ ان کے کنکشن کو روک دیا گیا ہے اور آدھار سے گیس کنکشن مربوط کروائے جانے کے بعد ہی ان کے کنکشن بحال کئے جائیں گے۔ شہر حیدرآباد و سکندرآباد میں اس طرح کی شکایات کے متعلق عہدیداروں نے بتایا کہ دونوں شہروں یا تلنگانہ میں اس طرح کی کوئی شکایات موصول نہیں ہوئی ہیں اور نہ ہی صارفین کو آدھار سے گیس کنکشن مربوط کروانے کے لئے کوئی دباؤ ڈالا جا رہاہے کیونکہ سپریم کورٹ نے 31مارچ تک کی جو مہلت فراہم کر رکھی ہے اس مہلت سے قبل صارفین کو یادہانی کروائی جا رہی ہے لیکن کنکشن روکنے یا بکنگ نہ کرنے کا کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا۔ہندستان پٹرولیم کے علاوہ دیگر کمپنیوں کے عہدیداروں نے بتایا کہ حکومت کے احکام کے مطابق گھریلو گیس صارفین کو آدھار سے مربوط کرنا لازمی ہے لیکن سپریم کورٹ کی جانب سے فراہم کردہ مہلت سے قبل کسی بھی صارفین کو خدمات کی فراہمی مفقود نہیں کی جائے گی لیکن صارفین سے خواہش کی جا رہی ہے کہ وہ معینہ مدت کے دوران اپنے کنکشن کو آدھار سے مربوط کرنے کے اقدامات کرلیں تاکہ مستقبل میں انہیں کسی قسم کے مسائل کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

TOPPOPULARRECENT