Thursday , December 14 2017
Home / ہندوستان / آدھار کو ای وی ایم سے مربوط کرنے کے امکانات روشن

آدھار کو ای وی ایم سے مربوط کرنے کے امکانات روشن

کولکتہ۔ 17 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) حکومتِ ہند کی یونیک آئڈنٹیفکیشن اتھاریٹی آف انڈیا کے آدھار کارڈ کا امریکہ میں رائج سوشیل سکیورٹی نمبر سے موازنہ کرتے ہوئے شہریوں کیلئے اس نظام کو موجودہ حالات میں اور مستقبل کے اعتبار سے نہایت مفید اور موزوں قرار دیا جارہا ہے۔ آدھار نمبر ہر ہندوستانی شہری کیلئے منفرد ہوتا ہے اور اس کے تحت متعلقہ فرد کی مختلف معلومات محفوظ کی جاتی ہیں۔ حالیہ عرصہ میں آدھار کو مختلف سرکاری محکموں کے ساتھ جوڑا جارہا ہے جیسے پرماننٹ اکاؤنٹ نمبر (PAN) کو آدھار سے مربوط کرتے ہوئے اسے ٹیکس ریٹرنس داخل کرنے کیلئے لازمی قرار دیا گیا ہے۔ اس اقدام کو سپریم کورٹ آف انڈیا کی منظوری بھی حاصل ہے۔ اس اقدام کی کامیابی کو دیکھتے ہوئے یہ تجویز مناسب معلوم ہورہی ہے کہ آدھار کو الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں (EVM) سے بھی اس طرح مربوط کردیا جائے کہ ووٹنگ کیلئے اس سے جڑی معلومات کی توثیق و تصدیق ہونا ناگزیر بن جائے۔ یہ بلاشبہ بہت ہی وسیع کام ہے جس کے لئے بہت سارے وسائل درکار ہوں گے۔ آدھار کو سب سے پہلے رائے دہندوں کے فوٹو شناختی کارڈ (EPIC) یعنی ووٹر آئی ڈی کارڈ سے مربوط کرنا ہوگا ۔ آدھار کو ای پی آئی سی سے مربوط کرنے کی تجویز الیکشن کمیشن آف انڈیا کو 27 فروری 2015ء پیش کی جاچکی ہے اور اس نے ابتدائی کام بھی شروع کیا ہے تاہم سپریم کورٹ نے 11 اگست 2015ء کو الیکشن کمیشن کے اس وسیع تر پراجیکٹ کو روک دیا۔ اب جبکہ سپریم کورٹ نے PAN کو آدھار سے مربوط کرنے کی اجازت دے دی ہے تو ای پی آئی سی سے آدھار کو بھی جوڑنے کے امکانات روشن ہوگئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT