Saturday , December 15 2018

آرمی ٹکنالوجی بورڈ کی دو یومی میٹ کا انعقاد

حیدرآباد ۔ 13 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : آرمی کے درکارات کو پورا کرنے کے لیے کم گیسٹیش مدت اور ٹرویس کی صلاحیت کو بہتر بنانے میں مدد کے ساتھ کٹنگ ایڈج اور نائچ ٹکنالوجیز پر مبنی پروجیکٹس کی بڑی تعداد ڈیولپمنٹ کے لیے زیر غور ہے ۔ بورڈ نے مختلف جاری پروجکٹس پر نظر ثانی کی ہے اور اس کے علاوہ آرمی ٹکنالوجی بورڈ کی 17 ویں دو یومی میٹ کے دوران جو آج سے ملٹری کالج آف الیکٹرانکس اینڈ میکانیکل انجینئرنگ (MCEME) سکندرآباد میں شروع ہورہی ہے میں بعض نئی تجاویز پر غور کیا جائیگا ۔ لیفٹننٹ جنرل سنجیو مدھوک ، جنرل آفیسر کمانڈنگ انچیف ، آرمی ٹریننگ کمانڈ میٹ کی صدارت کریں گے ۔ اس دو یومی میٹ میں شرکت کنندوں کی جانب سے کئی معنی خیز اور سود مند تجاویز پیش کی جائیں گی ۔ اس موقع پر لیفٹننٹ جنرل سنجیو مدھوک نے کہا آرمی ٹکنالوجی بورڈ ’ میک ان انڈیا ‘ کے ساتھ سینک تھا ، جو حکومت کا اقدام ہے ۔ آرمی ٹکنالوجی بورڈ آرمی میں ٹکنالوجیکل ایکسیلنس کے انجن کے طور پر مربوط تھا ۔ اس اے ٹی بی میٹ کے دوران مختلف آئی آئی ٹیز کے 65 سینئیر آرمی عہدیدار ، پروفیشنلس بشمول لیفٹننٹ جنرل جی ایس کٹوچ ، لیفٹننٹ جنرل روی تھوڈج ، لیفٹننٹ جنرل گرمکھ سنگھ ، پروفیسر ایم کے سرپا ( ڈائرکٹر آئی آئی ٹی روپر ) ، پروفیسر سجیت رائے ( ڈائرکٹر آئی آئی ٹی بھوبنیشور ) شرکت کررہے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT