Monday , December 11 2017
Home / Top Stories / آر ایس ایس سے اختلاف کرنے والوں کیلئے ملک میں جگہ نہیں

آر ایس ایس سے اختلاف کرنے والوں کیلئے ملک میں جگہ نہیں

الور بربریت کی مذمت، وزیراعظم نریندر مودی پر تنقید، ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ : راہول گاندھی

نئی دہلی ۔6  اپریل (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس لیڈر راہول گاندھی نے الور حملہ کیلئے وزیراعظم اور آر ایس ایس کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ ان کی رائے سے اختلاف کرنے والوں کیلئے ملک میں کوئی جگہ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب حکومت اپنی ذمہ داری سے لاپرواہی یا گریز اختیار کرے تو پھر بڑے پیمانے پر نقصانات کے حامل سانحے پیش آتے ہیں۔ انہوں نے وزیراعظم نریندر مودی اور آر ایس ایس کو خاص طور پر تنقید کا نشانہ بنایا اور وزیراعظم پر الزام عائد کیا کہ وہ ایک ایسے ویژن کی تشہیر کررہے ہیں جہاں صرف ایک ہی نظریہ کی گنجائش ہے۔ یہ ہندوستان کیلئے نریندر مودی کا انوکھا ویژن ہے اور وہ اسی کی تشہیر کررہے ہیں۔ یہ ایک ایسا ویژن ہے جہاں صرف ایک ہی نظریہ پروان چڑھے گا اور دوسرے کسی نظریہ کی گنجائش نہیں ہوگی۔ جو کوئی بھی نریندر مودی یا آر ایس ایس سے اتفاق نہ کرے اس کیلئے ملک میں کوئی جگہ نہیں ہے۔ راہول گاندھی نے پارلیمنٹ کے باہر ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں جو کچھ ہورہا ہے اس کے سنگین نتائج برآمد ہوسکتے ہیں۔ راہول گاندھی سے جب الور تشدد کے بارے میں پوچھا گیا

جہاں گاؤرکھشکوں نے بری طرح زدوکوب کا نشانہ بناتے ہوئے ایک شخص کو ہلاک کردیا، انہوں نے کہاکہ یہی سب کچھ ہوتا آرہا ہے۔ ان کی سوچ یہی ہے کہ جو بھی ان کی رائے سے اتفاق نہ کرے ان کے لئے ملک میں کوئی جگہ نہیں۔ قبل ازیں کانگریس نائب صدر نے سلسلہ وار ٹوئیٹس کے ذریعہ الور میں ظالمانہ کارروائی پر حکومت راجستھان کو تنقیدوں کا نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہاکہ جب کوئی حکومت اپنی ذمہ داریوں سے فرار اختیار کرتی ہے اور ہجوم کو قانون سے کھلواڑ کی اجازت دی جاتی ہے تو پھر ایسے سانحے پیش آتے ہیں۔ انہوں نے الور میں لا اینڈ آرڈر مفلوج ہوجانے پر افسوس کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہر صحیح فکر رکھنے والے ہندوستانی شہری کو اس ظالمانہ کارروائی کی مذمت کرنی چاہئے۔ راہول گاندھی نے توقع ظاہر کی کہ حکومت اس پاگل پن کی کارروائی کے ذمہ داروں کے خلاف سخت کارروائی کرے گی۔ راہول گاندھی نے کہا کہ جنہوں نے بھی یہ حملہ کیا ہے ان کے خلاف سخت کارروائی ہونی چاہئے۔ واضح رہیکہ گاؤرکھشکوں کے گروپ نے راجستھان کے الور میں مسلمانوں کے گروپ کو نشانہ بناتے ہوئے برسرعام زدوکوب کیا اور ان میں بری طرح زخمی 55 سالہ شخص ہاسپٹل میں جانبر نہ ہوسکا۔ پولیس نے مقدمہ درج کرتے ہوئے تین افراد کو گرفتار کیا ہے۔ مہلوک پہلو خاں کے علاوہ دیگر چار بشمول ان کے دو فرزندوں کو گایوں کی اسمگلنگ کا الزام عائد کرتے ہوئے حملہ کا نشانہ بنایا گیاتھا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT