Tuesday , November 21 2017
Home / ہندوستان / آر ایس ایس کے یونیفارم میں بھگوان کی مورتی

آر ایس ایس کے یونیفارم میں بھگوان کی مورتی

گجرات کے کانگریس لیڈر شنکر سنہا واگھلے کی تنقید
احمد آباد ۔ 8 ۔ جون : ( سیاست ڈاٹ کام) : سورت کی ایک مندر میں لارڈ سوامی نارائن کی مورتی کو آر ایس ایس کا لباس ( یونیفارم ) پہنا دینے پر تنازعہ پیدا ہوگیا ہے ۔ جب کہ کانگریس نے اس طرح کی حرکت کو بدبختانہ قرار دیا ہے ۔ یہ مسئلہ کل شب سماجی میڈیا پر اس وقت منظر عام پر آیا جب لارڈ سوامی نارائن کو سنگھی بناکر پیش کیا اور مورتی کو سفید شرٹ اور خاکی نیکر کے ساتھ کالی ٹوپی اور جوتے پہنائے گئے اور مورتی کے ایک ہاتھ میں قومی ترنگا بھی تھمادیا گیا ۔ سورت کے علاقہ لسکانا میں واقع مندر کے بچاری سوامی وشواپرکاش جی نے بتایا کہ یہ ڈریس ، ایک مقامی بھکت نے چند یوم قبل بطور تحفہ دئیے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ عموماً بھگوان کی مورتی کو مختلف لباس پیش کئے جاتے ہیں اور آر ایس ایس کا یونیفارم بھی ایک بھکت نے دیا ہے ۔ ہمارا کوئی ایجنڈہ نہیں ہے اور ہمیں یہ بھی نہیں معلوم تھا کہ یہ معمولی بات متنازعہ بن جائے گی ۔ اگرچیکہ مندر کے انتظامیہ نے بتایا کہ دائیں بازو کے نظریات کی تائید کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے لیکن کانگریس لیڈر شنکر سنہا واگھلے نے کہا کہ مندر انتظامیہ کو چاہئے کہ اس طرح کی سرگرمیوں سے باز رہے ۔ انہوں نے دریافت کیا کہ بھگوان کو خاکی لباس میں پیش کر کے کیا ثابت کرنا چاہتے ہیں ۔ جس نے بھی کیا ہے ٹھیک نہیں کیا ہے ۔ آج مورتی کو آر ایس ایس کے لباس پہنایا گیا ہے اور کل بی جے پی کا ڈریس بھی پہنایا جاسکتا ہے ۔ گجرات بی جے پی کے سربراہ وجئے روپانی نے بھی کہا کہ ایسا نہیں کرنا چاہئے تھا ۔ میں خود محو حیرت ہوں اور میں اس طرح کی حرکت کی حمایت نہیں کرسکتی ۔۔

TOPPOPULARRECENT