Friday , June 22 2018
Home / اضلاع کی خبریں / آر ٹی آئی ایکٹ کے نفاذ سے بدعنوانیوں میں کمی

آر ٹی آئی ایکٹ کے نفاذ سے بدعنوانیوں میں کمی

نظام آباد ۔19؍جنوری(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) رائٹ ٹو انفارمیشن ایکٹ مسائل کے حل کا ایک ہتھیار ہے اس سے استفادہ کرتے ہوئے مسائل کو حل کروانا چاہئے۔ ان خیالات کا اظہار شریمتی تانتھیا کماری اسٹیٹ انفارمیشن کمشنر آف اے پی نے کاماریڈی میں پرجا سیوا رائٹ ٹو انفارمیشن ایکٹ پروٹیکشن کمیٹی تلنگانہ ڈویژن آفس کے افتتاح کے بعد جلسہ سے خطاب کرتے

نظام آباد ۔19؍جنوری(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) رائٹ ٹو انفارمیشن ایکٹ مسائل کے حل کا ایک ہتھیار ہے اس سے استفادہ کرتے ہوئے مسائل کو حل کروانا چاہئے۔ ان خیالات کا اظہار شریمتی تانتھیا کماری اسٹیٹ انفارمیشن کمشنر آف اے پی نے کاماریڈی میں پرجا سیوا رائٹ ٹو انفارمیشن ایکٹ پروٹیکشن کمیٹی تلنگانہ ڈویژن آفس کے افتتاح کے بعد جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ آرٹی آئی ایکٹ نافذ ہونے کے بعد بد عنوانیوں میںکمی واقع ہورہی ہے۔ غریب اور پسماندہ طبقات کے لئے آرٹی آئی ایکٹ بیحد فائدہ مند ثابت ہورہا ہے اور اس کے بہتر نتائج برآمد ہورہے ہیں۔ اس ایکٹ کے تحت 30یوم میں معلومات فراہم کرنا عہدیداروں کی ذمہ داری ہے۔ اسٹیٹ چیرمین پرجا سیوا رائٹ ٹو انفارمیشن ایکٹ پروٹیکشن کمیٹی شیخ محمود شرار نے خطاب کرتے ہوئے کمیٹی کی جانب سے مکمل تعاون کا تیقن دیا۔ محمد علیم الدین اسٹیٹ وائس چیرمین نے خطاب کرتے ہوئے تانتھیا کماری کی خدمات اور کارناموں پر تفصیلی روشنی ڈالی اور ان کی خدمات کو زبردست خراج تحسین پیش کیا۔ اسٹیٹ آرگنائزنگ سکریٹری محمد جانی ،

محمد عبدالسلیم ایڈوکیٹ نے بھی مخاطب کیا۔ اس موقع پرمحمد عزیز خان، محمد انور، سید احمد ہاشمی، آدم الدین، اصغر علی، رحمت علی، کوثر علی، افتخار باباکے علاوہ عوام کی کثیر تعداد موجود تھی۔اسٹیٹ جنرل سکریٹری ایم اے رحمن کے شکریہ پر جلسہ کا اختتام ہوا۔کمشنر قانون حق معلومات تانتھیا کماری کل کاماریڈی میں مصروف ترین دن گذارا ۔ صبح 10-30بجے سے شام 5-30بجے تک کاماریڈی میں مختلف دفاتر و پروگراموں میں شرکت کی ۔ انہوں نے سرکاری دفاتر اور دواخانے کا معائنہ کرتے ہوئے عہدیداروں کی کارکردگی پر ناراضگی ظاہر کی۔ تانتھیا کماری آرڈی او وینکٹیشورلو و دیگر عہدیداروں کے ہمراہ سرکاری دواخانہ پہنچ کر دواخانہ کی کارکردگی کا جائزہ لیا ۔ انہوں نے دواخانوں کی کارکردگی پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے غریب عوام کیلئے دواخانوں میں سہولت فراہم نہیں کی گئی تو ان کا کیا حال ہوگا انہیں اوڑھنے کیلئے بیڈشیٹ فراہم کیوں نہیں کی گئی کہ کرسپرنٹنڈنٹ دواخانہ اجئے کمار پر ناراضگی ظاہر کی اور مریضوں سے بات چیت کی ۔ بعد ازاں دواخانہ کے ریکارڈ کا بھی معائنہ کیا ۔ اس موقع پر ایک مریض نے کمشنر سے شکایت کرتے ہوئے کہا کہ انہیں صحیح طرح سے علاج نہیں کیاجارہا ہے اور سہولتیں بھی فراہم نہیں کی جارہی ہے جس پر ڈاکٹر نے کمشنر کے روبرو شکایت کرنے پر برہمی کا اظہار کرنے پر کمشنر نے ڈاکٹر پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میرے سامنے ہی مریضوں کے ساتھ اس طرح کا سلوک کیا جارہا ہے

میری غیر موجود گی میں کیا سلوک ہوگا۔ اس کا اندازہ مجھے ہورہا ہے لہٰذا رویہ کو تبدیل کرنے کی ہدایت دی ۔ کمشنر نے قبل از میونسپل آفس پہنچ کر ریکارڈ کا معائنہ کیا ۔ کمشنر کے دورہ کے موقع پر بلدیہ آفس میں برقی سربراہی مسدود تھی جس پر انہوں نے فوری ڈی ای الکٹرسٹی کو طلب کیا اور کمشنر کے دورہ کے موقع پر برقی سربراہی کیوں روکی گئی کہہ کر دریافت کیا ۔ میونسپل ریکارڈس کی تنقیح کی اور صحیح طرح سے ریکارڈس نہ پائے جانے پر برہمی کا اظہار کیا۔ قانون حق معلومات کے تحت درخواست دینے والے کو وہ رسید دیں اور اندرون 30یوم تفصیلات سے آگاہ کریں۔ اور ایک ماہ کے وقت کے باوجود جواب نہ ملنے کی صورت میں اپیل کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے بلدیہ میں قانون حق معلومات ایکٹ کے تحت کتنی درخواستیں موصول ہوئی ہیں اس کے بارے میں بھی دریافت کیا۔ اس موقع پر آرڈی او وینکٹیشورلو ، کمشنر بلدیہ بالاجی نائک ، تحصیلدار سدرشن ، ٹرینی ڈی ایس پی رمنا ریڈی ، سرکل انسپکٹر سشما، سبھاش چندرابوس اور دیگر عہدیدار بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT