Monday , July 16 2018
Home / شہر کی خبریں / آر ٹی سی بسوں کی تفصیلات کیلئے ’’ ٹیک سواری‘‘ ایپ متعارف

آر ٹی سی بسوں کی تفصیلات کیلئے ’’ ٹیک سواری‘‘ ایپ متعارف

مسافروں کو سہولت فراہم کرنے میں بھون میں اجلاس ، میٹرو ، سٹ ون اور آر ٹی سی عہدیداروں کی شرکت
حیدرآباد /11 جولائی ( سیاست نیوز ) محکمہ ٹرانسپورٹ کے سکریٹری و انچارج آر ٹی سی ایم ڈی سنیل شرما نے بتایا کہ ’’ ٹی سواری‘‘ ایپ کے ذریعہ آر ٹی سی بسوں کی تفصیلات حاصل کی جاسکتی ہیں ۔ آر ٹی سی کے بس بھون میں آر ٹی سی ، میٹرو ریل ، سٹ ون عہدیداران کے ساتھ سفر میں سہولت کی فراہمی سے متعلق ایک جائزہ اجلاس سے مخاطب تھے ۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ بسوں کو ٹراک کیلئے میٹرو ریل کے ٹی سواری ایپ سے مربوط کیا جائے گا ۔ جس کا مقصد شہریوں کو سفر کی سہولیات فراہم کرنا ہے ۔ علاوہ ازیں ٹرانسپورٹ سسٹم سے استفادہ کیلئے ایک ہی کارڈ جاری کیا جائے گا اور اس کارڈ کے ذریعہ آر ٹی سی ، ایم ایم ٹی ایس ، میٹرو ، سیٹ ون ، کیابس وغیرہ میں سفر کیا جاسکتا ہے اور اس ایپ کے ذریعہ مختلف گاڑیوں کے ٹکٹوں کی شرح بھی اور اس کارڈ کے ذریعہ اگر میٹرو کے ذریعہ سفر کرتے ہیں جو ٹکٹ کی قیمتیں میٹرو کے اکاونٹ اور اگر آر ٹی سی ، ایم ایم ٹی ایس ، سٹ ون اور ٹیکسیوں کے ذریعہ سفر کرتے ہیں ان کے ٹکٹوں کی قیمتیں ان کے اکاونٹوں میں جمع ہوجائیں گے ۔ سکریٹری سنیل شرما نے مزید بتایا کہ آر ٹی سی کو میٹرو سے مربوط کرتے ہوئے دو ماہ کے اندر اس سہولت کا آغاز کردیا جائے گا اور میٹرو ریلوں کے اوقات کے مطابق مسافرین کی سہولت کیلئے آر ٹی سی بسیں بھی چلائی جائیں گی ۔ انہوں نے واضح کیا کہ آر ٹی سی بسوں کی تعداد میں کمی نہیں کی جائے گی بلکہ الکٹرک بسوں کے ذریعہ تعداد میں مزید اضافہ کیا جائے گا اور اس اجلاس میں گریٹر حیدرآباد ای ڈی پرشوتم نائک آپریشنس ای ڈی کمریا ، ریونیو ای ڈی ، وینکٹیشور راؤ ، آر ٹی سی کالج پرنسپل ، سی پی آر او کرن ریڈی اور دیگر شریک تھے جبکہ میٹرو ریل ایم ڈی مسٹر این وی ایس ریڈی نے کہا کہ فضائی آلودگی اور ذاتی گاڑیوں کے استعمال میں کمی کیلئے عوامی ٹرانسپورٹ سسٹم کو مضبوط کرنے کی ضرورت ہے اور تمام ٹرانسپورٹ اداروں کو مربوط کرنے کیلئے ہی ٹاسک فورس کمیٹی کا قیام عمل میں لایا گیا ہے اور میٹرو ریل پراجکٹس کی تکمیل کی صورت میں روزانہ 15 لاکھ مسافرین کی آمد و رفت ہوسکتی ہے ۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ بڑی بڑی گاڑیوں میں سفر کو شان و شوکت تصور کرنے کے بجائے پبلک ٹرانسپورٹ کے ذریعہ سفر کرنے کو شان و شوکت تصور کریں اور عہدیدارن بھی پبلک ٹرانسپورٹ کا استعمال ہی کریں گے ۔

TOPPOPULARRECENT