Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / آر ٹی سی بسوں کے ایندھن سے ماحولیاتی آلودگی

آر ٹی سی بسوں کے ایندھن سے ماحولیاتی آلودگی

امراض میں اضافہ ، پولیوشن سرٹیفیکٹ کے لیے خانگی افراد پر دباؤ ، سرکاری گاڑیاں نظر انداز
حیدرآباد۔11اگسٹ (سیاست نیوز) آر ٹی سی بسوں سے خارج ہونے والا دھواں شہر میں ماحولیاتی آلودگی میں اضافہ کا سبب ہے۔ شہریو ںمیں پھیلنے والی متعدد سانس میں تکلیف اور ماحولیاتی آلودگی کے سبب ہونے والی بیماریوں کی بنیادی وجہ شہر میں ماحولیاتی آلودگی میں ہونے والا اضافہ ہے لیکن اس اضافہ کو روکنے کے لئے کئے جانے والے اقدامات ناکافی تصور کئے جا رہے ہیں کیونکہ عام طور پر شہریوں کی گاڑیوں کے پولیوشن سرٹیفیکیٹ کی جانچ ہوتی ہے اور سرکاری گاڑیوں کو ایسی کسی جانچ کے سبب جرمانہ عائد نہیں ہوتا بلکہ ان گاڑیوں کے ذریعہ خارج ہونے والا دھواں ماحولیاتی آلودگی میں خرابی پیداکرنے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ شہر کے مختلف مقامات بالخصوص جن سڑکوں سے بسیں گذرتی ہیں ان سڑکوں پر تجارت کرنے والوں کا جائزہ لینے پر یہ بات سامنے آئے گی کہ آر ٹی سی بسوں سے خارج ہونے والا دھواں کسی حد تک شہریوں کو نقصان پہنچا رہاہے۔ محکمہ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن کا کہنا ہے کہ شہر میں چلنے والی تمام بسوںکے فٹنس اور ان سے ہونے والی آلودگی کے متعلق جانچ کی جاتی رہتی ہے لیکن اس کے باوجود بعض بسوں سے کثیف دھوئیں کے اخراج کی شکایات موصول ہوتی ہیں جنہیں دور کرنے کیلئے اقدامات پر غور کیا جا رہا ہے لیکن اس کے باوجود بھی شہر کی کئی اہم سڑکو ںپر آر ٹی سی بسوں کی آلودگی کے سبب عوام کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔محکمہ ٹریفک پولیس کے ملازمین کا کہنا ہے کہ صرف شہر حیدرآباد میں چلنے والی بسوں سے ہی نہیں بلکہ ریاست کے دیگر علاقو ںسے شہر پہنچنے والی سرکاری بسوں اور بین ریاستی بسوں کے سبب بھی آلودگی میں اضافہ ہوتا ہے اور شام کے وقت جب کہ شہری ٹریفک میں کچھ حد تک کمی ہوتی ہے اس وقت بین ریاستی بسوں کی آمد کے سبب آلودگی میں اضافہ ہونے لگتا ہے۔حیدرآباد کو ماحولیاتی آلودگی سے پاک بنانے کیلئے ضروری ہے کہ شہر میں چلائی جانے والی بسو ںکو مکمل طور پر سی این جی سے چلانے کے اقدامات میں تیزی لائی جائے تاکہ آلودگی میں نمایاں کمی ہو لیکن محکمہ آر ٹی سی کی جانب سے اس سلسلہ میں تیز پیشرفت کے لئے اقدامات نہ کئے جانے کے سبب ایسا جلد ہونا ممکن نظر نہیں آرہاہے جبکہ حکومت کی جانب سے شہر حیدرآباد کو عالمی معیار کے شہروں کی فہرست میں شامل کروانے کی کئی کوششوں کے اعلانات کئے جا رہے ہیں لیکن اس کے باوجود بھی سرکاری بس خدمات کو آلودگی سے پاک بنانے کی سمت تیز رفتار پیشرفت سے گریز کیا جا رہا ہے۔ماہرین امراض تنفس کا کہنا کہ شہری آلودگی میں کمی کی صورت میں سانس لینے میں دشواری ‘ استھما‘ سانس پھولنا اور الرجی جیسے امراض کی بڑھتی شرح پر تیزی سے قابو پایا جا سکتا ہے ۔دونوں شہروں کے حدود میں چلائی جانے والی بس خدمات کو بہتر بنانے کے علاوہ معیاری بس خدمات کے سلسلہ میں مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے شہری حدود میں چلائی جانے والی بسوں کے نظم کو حاصل کرنے پر بھی غور کیا جانے لگا ہے لیکن اگر ایسا ہوتا بھی ہے تو سب سے پہلے بس خدمات کو آلودگی سے پاک بنانے کے اقدامات کئے جانے کی ضرورت ہے ۔

TOPPOPULARRECENT