Wednesday , June 20 2018
Home / اضلاع کی خبریں / آر ٹی سی ملازمین کی ہڑتال چوتھے دن میں داخل

آر ٹی سی ملازمین کی ہڑتال چوتھے دن میں داخل

مختلف انجمنوں اور سیاسی پارٹیوں کی تائید

مختلف انجمنوں اور سیاسی پارٹیوں کی تائید
کریم نگر۔/9مئی، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) آر ٹی سی ملازمین کی ہڑتال چوتھے دن میں داخل ہوچکی ہے۔ ویسے پولیس کی نگرانی میں کچھ بسوں کو چلایا جارہا ہے ۔ تمام ڈپوز کے پاس ملازمین احتجاجی پروگراموں میں مشغول ہیں ۔ کریم نگر بس اسٹانڈ سے تلنگانہ چوک تک آر ٹی سی ملازمین نے بڑے پیمانے پر جلوس نکالا جس میں ارتھی بھی شامل تھی۔ ہڑتال کی مختلف پارٹیوں کی جانب سے تائید کی جارہی ہے۔ کانگریس، ٹی ڈی پی، سی پی آئی ایم، بی جے پی قائدین ہڑتال کی تائید کررہے ہیں اور احتجاجی پروگراموں میں شریک ہورہے ہیں۔ ہڑتال کی وجہ سے مسافرین کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ اکثر لوگ اپنے سفر کو ملتوی کررہے ہیں۔ اس لئے کہ چلائی جانے والی آر ٹی سی بسوں کو نہیں معلوم کہاں روک لیا جائے گا۔ خانگی جیپ کاروں کے مالکین من مانی کرایہ پر مسافرین کو لے جارہے ہیں ان کی حرص لوٹ مار کا کچھ حد و حساب نہیں ۔ سفر کرنے والے کی غرض کے مطابق کرایہ مانگ رہے ہیں۔ آر ٹی سی کی جانب سے کرایہ پر حاصل کردہ بسوں کو جزوقتی ڈرائیورس اور کنڈکٹرس کی خدمات سے پولیس بندوبست کے ساتھ مختلف روٹس پر بسوں کو چلایا جارہا ہے۔ لیکن اس میں بھی مسافرین سفر کرنے سے ہچکچارہے ہیں۔ کرایہ کی بسوں کے ڈرائیور اپنے کنڈکٹر کو مقرر کرکے بسو ں کو چلارہے ہیں ۔ اس طرح حاصل ہونے والی آمدنی بھی وہی لے جارہے ہیں کہا جارہا ہے۔ کنٹراکٹ کے تحت چلائے جارہے بسوںکے ڈرائیورس اور کنڈکٹرس موقع کا فائدہ اٹھاتے ہوئے بغیر ٹکٹ دیئے مسافرین کو لے جاتے ہوئے کرایہ کی رقم جیبوں میں ڈال رہے ہیں۔ چار دن سے بسوں کو چلانے پر ڈیزل خرچ ہورہا ہے۔ ڈرائیور کو روزانہ ایک ہزار روپئے اور کنڈکٹر کو 800روپئے دینے پڑ رہے ہیں۔ کریم نگر ریجن کو روزانہ 30تا40 لاکھ روپئے کا نقصان ہورہا ہے۔ آر ٹی سی ہڑتالی ملازمین سے سابق وزیر سریدھر بابو، ورنگل سابق رکن پارلیمنٹ سرسلہ راجیا، سابق وہپ آرے پلی موہن، سابق زیڈ پی چیرمین اے لکشمن کمار تلگودیشم ، سی پی آئی، سی پی ایم قائدین نے یگانگت کا اظہار کیا۔ کریم نگر میں 11ڈپوز ہیں جن میں 915بسیں ہیں اس میں سے 25فیصد بسوں کو چلایا جارہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT