Saturday , November 18 2017
Home / Top Stories / آزاد ہندوستان میں بی جے پی جتنی مشکلات کسی نے نہیں جھیلیں

آزاد ہندوستان میں بی جے پی جتنی مشکلات کسی نے نہیں جھیلیں

ہم نے سب سے زیادہ قربانیاں پیش کیں۔ بی جے پی ہیڈ کوارٹر کی نئی عمارت کا سنگ بنیاد۔ وزیر اعظم نریندر مودی کا خطاب

نئی دہلی 18 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر اعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ آزاد ہندوستان میں جتنی مشکلات بی جے پی کو درپیش ہوئی ہیں اتنی انگلش راج میں کانگریس کو بھی برداشت کرنی نہیں پڑیں۔ انہوں نے اس بات پر تنقید کی کہ ان کی پارٹی کی ہر کوشش کو غلط تناطر میں دیکھا جاتا ہے ۔ یہ واضح کرتے ہوئے کہ بی جے پی نے کسی اور جماعت سے زیادہ قربانیاں پیش کی ہیں انہوں نے کہا کہ بگاڑ پیدا کرنے والی طاقتیں اب مزید سرگرم ہوگئی ہیں کیونکہ ملک کی طاقت بڑھ رہی ہے ۔ اور اب یہ مزید ضروری ہوگیا ہے کہ سماج کو مزید مستحکم کیا جائے اور مزید ہم آہنگ بنایا جائے ۔ نریندر مودی نے بی جے پی کے نئے ہیڈ کوارٹرس کا آج سنگ بنیاد رکھا ۔ سب کا ساتھ سب کا وکاس نعرہ کے تحت سب کو ساتھ لے کر چلنے پارٹی کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے انہوںنے پارٹی ورکرس سے کہا کہ وہ ملک اور جمہوری دنیا کے سامنے مثال پیش کریں کہ پارٹی کس طرح نظریات پر کام کرتی ہے اور موروثی کام کاج کی مخالفت کرتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دنیا آج بی جے پی کو جس رنگ میں جانتی ہے پارٹی ویسی نہیں ہے بلکہ دنیا کا تاثر کہا سنی پر مشتمل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی وہ واحد جماعت ہے جو اپنے قیام کے بعد سے مسائل کا سامنا کر رہی ہے ۔ اسے ہر موڑ پر مشکلات پیش آئی ہیں اور اس کی ہر کوشش کو غلط پس منظر میں دیکھا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ برطانوی راج کے دور میں بھی کانگریس نے اتنی مشکلات کا سامنا نہیں کیا ہے جتنی مشکلات ہم نے جھیلی ہیں۔ انہوں نے ادعا کیا کہ ہمارے پر عزم ورکرس نے 50 – 60 سال کا عرہص گذار دیا ہے ۔ اس تقریب میں بی جے پی سربراہ امیت شاہ ‘ سینئر قائدین ایل کے اڈوانی ‘ راج ناتھ سنگھ اور ارون جیٹلی نے بھی شرکت کی ۔

انہوں نے کہا کہ حالیہ مغربی بنگال اسمبلی انتخابات کے دوران کولکتہ میں بی جے پی کو اپنے دفتر کیلئے جگہ کرایہ پر حاصل کرنا تک مشکل ہوگیا تھا ۔ جو کوئی بی جے پی کو دفتر کی جگہ دینے تیار تھا وہ جانتا تھا کہ اسے مشکلات کا سامنا کرنا پڑیگا ۔ اس طرح بالواسطہ طور پر مودی نے ترنمول کانگریس پر تنقید کی ۔ آزادی کے بعد شائد کسی بھی جماعت کو اتنی مشکلات کا سامنا نہیں ہوا جتنی ہم نے جھیلی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی کے سینکڑوں کارکن ہلاک کردئے گئے کیونکہ وہ موجودہ نظریات سے اتفاق نہیں رکھتے تھے ۔ بی جے پی ورکرس ہجوم کیلئے کام نہیں کرتے بلکہ وہ تنظیم کیلئے کام کرتے ہیں۔ ہمارے لئے نظریات اہمیت کے حامل ہیں۔ انہوں نے مزاحیہ انداز میں کہا کہ بی جے پی کے جتنے امیدواروں کی انتخابی ضمانتیں ضبط ہوئی اتنی کسی اور جماعت کے امیدواروں کی نہیں ہوئیں۔

TOPPOPULARRECENT