Sunday , November 19 2017
Home / سیاسیات / آسام انتخابات کیلئے عظیم اتحاد کا قیام ‘اجمل کی کوشش

آسام انتخابات کیلئے عظیم اتحاد کا قیام ‘اجمل کی کوشش

مابعدانتخابات کانگریس کے ساتھ اتحاد کا امکان برقرار ‘ ماقبل انتخابات اتحاد کا امکان مسترد
نئی دہلی۔6ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) مخالف بی جے پی  اور مخالف کانگریس عظیم اتحاد امکان ہے کہ آسام میں بھی قائم ہوجائے گا ۔ رکن پارلیمنٹ بدرالدین اجمل کی پارٹی اے آئی یو ڈی ایف نے پہل کی ہے کہ اے جی پی ‘ جے ڈی یو اور ترنمول کانگریس کے ساتھ آئندہ اسمبلی انتخابات کیلئے اتحاد کرے ۔ 65سالہ اے آئی یو ڈی ایف قائد نے کہا کہ وہ جے ڈی یو کے صدر شردیادو سے ملاقات کر کے اُن پر واضح کریں گے کہ آسام میں عظیم اتحاد کی تشکیل کے کتنے مواقع موجود ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وہ پہلے ہی چیف منسٹر مغربی بنگال ممتا بنرجی سے بات چیت کرچکے ہیں اور انہوں نے ہمارے ساتھ اتحاد سے دلچسپی ظاہر کی ہے ۔انہوں نے مجھ سے کہا کہ ترنمول کانگریس آسام میںہمارے ساتھ اتحاد کے ذریعہ چند نشستوں پر انتخابی مقابلہ کرے گی ۔ ممتا بنرجی نے مجھ سے کہا کہ پی ایم سی اس کے عوض ہماری پارٹی کو مغربی بنگال میں چند نشستوں پر مقابلہ کا موقع فراہم کرے گی ۔ انہوں نے کہا کہ وہ ممتابنرجی سے جلد ہی دوبارہ ملاقات کریں گے ۔ بدرالدین اجمل نے کہا کہ وہ اے جی پی سے بھی ملاقات کرچکے ہیں اور اس کے جواب کے منتظر ہیں ۔ انہوں نے چیف منسٹر بہار نتیش کمار کی تقریب حلف برداری میں بھی حال ہی میں شرکت کی تھی ۔ خوشبویات کے شعبہ کی ایک اہم شخصیت بدرالدین اجمل نے کہا کہ اے آئی یو ڈی ایف بی جے پی اور کانگریس کی کھلی مخالف ہے ‘ تاہم انتخابات کے بعد کانگریس کے ساتھ اتحاد کے بارے میں کھلا ذہن رکھتی ہے ۔ اے آئی یو ڈی ایف جسے آسام کی مسلم غالب آبادی والے اضلاع میں نمایاں اہمیت حاصل ہے ‘تاہم ماقبل انتخابات کانگریس کے ساتھ اتحاد کی تجویز کو مسترد کردیا ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے ساتھ انتخابات سے پہلے اتحاد کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ۔

TOPPOPULARRECENT