Friday , September 21 2018
Home / دنیا / آسٹریلیا میں سوچی کا کلیدی خطاب ناسازی مزاج پر منسوخ

آسٹریلیا میں سوچی کا کلیدی خطاب ناسازی مزاج پر منسوخ

سڈنی ۔ 19 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) میانمارکی قائد آنگ سان سوچی نے آج سڈنی میں منعقد شدہ ان کے ایک عوامی اجلاس میں جہاں انہیں نہ صرف تقریر کرنی تھی بلکہ سوالات اور جوابات کے ایک سیشن میں بھی حصہ لینا تھا، شرکت سے یہ کہہ کر معذرت خواہی کرلی کہ ان کا مزاج ناساز ہے۔ اس ایونٹ کے منتظمین نے یہ بات بتائی۔ یاد رہیکہ میانمار کے راکھین اسٹیٹ میں لاکھوں روہنگیا مکسلمانوں پر بدھسٹوں اور ملک کی فوج کی جانب سے ڈھائے جارہے ظلم وستم پر سوچی نے لب کشائی سے گریز کیا تھا لہٰذا روہنگیاؤں کے لئے ہمدردی کے دو الفاظ بولنے کا تو سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ ظلم و جبر اور قتل عام کے خوف سے تقریباً سات لاکھ روہنگیائی بنگلہ دیش فرار ہوگئے۔ اسی لئے عالمی سطح پر سوچی کے خلاف غم و غصہ پایا جاتا ہے بلکہ جس وقت سوچی آسیان۔ آسٹریلیا اجلاس میں شرکت کیلئے سڈنی پہنچی تھیں ان کے خلاف احتجاجی مظاہرے بھی کئے گئے تھے۔ کینبرا میں رہتے ہوئے وزیراعظم مالکم ٹرنبل سے ملاقات بھی ان کے پروگرام میں شامل ہے اور منگل کے روز لووی انسٹیٹیوٹ میں ایک کلیدی خطاب بھی کرنے والی تھیں تاہم آج دوپرہ میانمار کے سفارخانے سے ان کے ناسازی مزاج کی اطلاع دی گئی اور یہ کہہ کر معذرت خواہی کرلی گئی کہ موصوفہ اس ایونٹ میں شرکت نہیں کرسکیں گی لہٰذا ایونٹ کو منسوخ کردیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT